مقبول خبریں
اولڈہم ٹاؤن میں پہلی جنگ عظیم کی صد سالہ تقریب،جم میکمان،مئیر کونسلر جاوید اقبال و دیگر کی شرکت
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
وزیر اعظم پاکستان آزاد خطے کی وزارت کو براہ راست اپنے کنٹرول میں لیں:تحریک حق خود ارادیت
لندن... بیرون ملک مقیم ریاستی کشمیری وزیر امور کشمیر برجیس طاہر کے رویے اور بیانات کی پر زور مذمت کرتے ہوئے وزیر اعظم پاکستان میاں نواز شریف سے مطالبہ کرتے ہیں کہ انہیں جلد از جلد بر طرف کر کے آزاد کشمیر کی منتخب حکومت اور اسکے وزیر اعظم چوہدری عبدالمجید کی عزت نفس بحال کی جائے،تاکین وطن کشمیری جو تحریک آزادی کشمیر کے اصل سفیر ہیں انہیں آزاد کشمیر کے سیاسی اور انتظامی معاملات میں وزیر امور کشمیر کی مداخلت پر سخت تشویش ہے اور ایسے اقدامات سے بیرون ملک مسئلہ کشمیر پر سفارتی کوششوں میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑیگا اور بھارتی حکمرانوں کو پاکستان کے خلاف منفی پروپیگنڈہ کرنے کا موقع ملے گا،وزیر اعظم پاکستان میاں نواز شریف آزاد خطے کی حساس نوعیت کے پیش نظر اس وزارت کو براہ راست اپنے کنٹرول میں لیں اور چند شرپسند عناصر کے جھوٹے پروپیگنڈے میں آنے کی بجائے ریاست کی دونوں اکائیوں آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کی منتخب حکومتوں کو تنگ کرنے کی پالیسی پر نظر ثانی کروائیں جنہیں ریاستی عوام نے بھاری مینڈیٹ دیکر منتخب کیا ہوا ہے ان خیالات کا اظہار جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت یورپ کے مرکزی عہدیداروں سر پرست سردار عبدالرحمان خان،چیئرمین راجہ نجابت حسین،سیکرٹری جنرل محمد اعظم،وائس چیئرمین امجد حسین مغل،یارکشائر کے چیئرمین چوہدری محمد اکرم،نارتھ ویسٹ کے چیئرمین سالار ممتاز احمد چشتی،بریڈ فورڈ کے سابق لارڈ میئر کونسلر غضنفر خالق،پیپلز پارٹی بریڈ فورڈ کے قائمقام صدر چوہدری عبدالقیوم،شعبہ خواتین کی رہنمائوں صبیحہ شہزاد،فلک خان،یاسمین ڈار اور دیگر رہنمائوں نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں پاکستان کے وزیر امور کشمیر کی آزاد کشمیر کے معاملات میں بے جا مداخلت،آزاد کشمیر میں ضمنی انتخابات کے دوران رینجرز کی تعیناتی اور آئے روز حکومت آزاد کشمیر کیخلاف بیان بازی کو ریاست کی منتخب حکومت کو گرانے کی گھنائونی کوشش قرار دیتے ہوئے کہا کہ اگر ایسا کیا گیا تو بیرون ملک کشمیری چپ نہیں رہیں گے اور ایسے لوگوں کے رویے کیخلاف بیرون ملک بھرپور تحریک چلائی جائیگی ان رہنمائوں نے کہا کہ آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کی حکومتیں ریاستی تشخص کی علامت ہیں اور انکے خلاف غیر ضروری بیانات اور انتقامی کارروائی سے پاکستان کے مسئلہ کشمیر پر عوامی موقف پر بھی حرف آئے گا اور بیرون ملک کشمیری یہ سوچنے پر مجبور ہونگے کہ حکومت پاکستان بھی کشمیریوں کو غلام بنانا چاہتی ہے،ان رہنمائوں نے کہا کہ ہماری تحریک ریاست کے اندر حق خود ارادیت کا حصول ہے اور پاکستان کی حکومت نے اپنا رویہ تبدیل نہ کیا تو ہمیں بھی متبادل راستے اختیار کرنا پڑینگے، تحریک کے ان رہنمائوں نے وزیر اعظم نواز شریف سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنی پارٹی اور وزیر امور کشمیر برجیس طاہر کی ان کوششوں کو بند کریں جس کے تحت چوہدری عبدالمجید کو تنگ کر رہے ہیں،انہوں نے وزیر اعظم سے کہا کہ وزیر اعظم آزاد کشمیر کے خلاف عدم اعتماد کے وقت آپ نے شرپسندوں کا ساتھ نہ دیکر کشمیریوں کے دل جیت لئے تھے اسی طرح برجیس طاہر کو برطرف کر کے بیرون ملک کشمیریوں کی تحریک آزادی کشمیر کے حوالے سے قربانیوں کو پیش نظر رکھ کر کارروائی کریں،ان رہنمائوں نے کہا کہ ہمارا کسی سیاسی جماعت یا شخصیت کے حق میں بیان نہیں ہے بلکہ ہم ریاستی تشخص اور کشمیری جدوجہد کو سامنے رکھ کر حکومت پاکستان سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ ریاست کے دونوں آزاد علاقوں میں عوامی خواہشات کے مطابق حکومتوں سے تعاون کریں اور انہیں بھی اپنی طرح حکومت چلانے کا موقع دیں،تحریک آزادی کے ان سفارتی رہنمائوں نے ریاستی لیڈر شپ سے بھی مطالبہ کیا کہ وہ کھل کر آزاد حکومت کی معاونت کریں اور وزیر امور کشمیر کے خلاف جدو جہد کریں تاکہ مسئلہ کشمیر پر منفی اثرات سے بچا جا سکے۔