مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
اسلام ایک پر امن مذہب ، غلط طور پر دہشت گردی کے ساتھ نتھی کیا جا تا ہے: فل بینن
برمنگھم ... برطانوی مسلمان کمیونٹی اخلاقی اقدار کو پروان چڑھانے میں ذمہ دارانہ کردار ادا کر رہی ہے انسانیت کا احترام ہی تمام مذاہب کا سبق ہے جس پر عمل پیرا ہو کر معاشرتی خوبصورتی میں اضافہ کیا جا سکتا ہے ان خیالات کا اظہار یورپی ممبر پارلیمنٹ فل بینن نے منہاج القرآن انٹرنیشنل برمنگھم کے زیر اہتمام بین المذاہب سیمینار سے خطاب کر تے ہوئے کیا شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری کی سالگرہ کے حوالے سے منعقدہ سیمینار میں علامہ اشفاق عالم قادری نے سٹیج سیکرٹری کے فرائض انجام دیے جبکہ مرکزی جماعت اہلسنت برطانیہ و یورپ کے راہنماؤں پیر سید زاہد حسین رضوی، مفتی عبدالرسول منصور الازہری، علامہ احمد نثار بیگ، پیر لخت حسنین شاہ، مفتی فضل احمد قادری، کونسلر عنصر علی خان، مولانا بوستان قادری، مولانا سرفراز مدنی، سید علی عباس بخاری اور منہاج القرآن برطانیہ کے چیف اورگنائزر ڈاکٹر رحیق عباسی سمیت کرسچن،ہندؤ،سکھ اور یہودی کمیونٹی کے راہنماؤں نے خطاب کیا ممبر یورپی پارلیمنٹ فل بینن کا کہنا تھا کہ اسلام ایک پر امن مذہب ہے جسے غلط طور پر دہشت گردی کے ساتھ نتھی کیا جا رہا ہے لیکن ڈاکٹر طاہر القادری جیسیے اسلامک سکالرز نے جس اعلی طریقے سے تحریری اور تقریری طریقے سے مسلمانوں کی اکثریت کو مجرمانہ سرگرمیوں کے اقلیتی طبقے سے الگ کیا ہے اور اس کی کھل کر نہ صر مذمت کی ہے بلکہ عملی طور پر اقدامات بھی کیے ہیں وہ قا بل تحسین ہے سید زاہد حسین رضوی نے کہا دہشت گردی کے خلاف فتوی جیسی مدلل تصنیف نے نہ صرف غیر مسلموں کو اسلام کے پرامن پیغام سے آگاہ کیا ہے بلکہ مسلم نوجوان نسل کو بھی ایسا اسلحہ فراہم کیے ہے جس کے ذریعے وہ ہر علمی و عملی میدان میں اپنی اسلامی تعلیمات کا دفاع کر سکتے ہیں علامہ احمد نثار بیگ نے کہا کہ برطانوی مسلمان معاشرے کا پرامن حصہ ہیں اور وہ ہر اس میدان میں عملی کردار ادا کریں گے جو بین المذاہب ہم آہنگی اور انسانیت کے احترام کے لیے قائم کیا جائے گا پیر لخت حسنین شاہ نے کہا کہ ڈاکٹر طاہر القادری نے برٹش مسلم نوجوانوں کو اسلامی و اخلاقی تعلیمات موجودہ دور کی ضروریات کے مطابق فراہم کر کے ایک عظیم ذمہ داری ادا کی ہے مفتی فضل احمد قادری نے کہا کہ طاہر القادری بااثر علمی شخصیت ہیں جن کاعلم و عمل امت مسلمہ کے لیے رب کریم کی نعمت ہے مولانا بوستان قادری نے کہا کہ ڈاکٹر قادری اوورسیز پاکستانیوں کی نمائندگی کرتے ہوئے وطن عزیز میں کرپٹ اور نااہل حکمرانوں کے خلاف برسرپیکار ہیں اور دنیا بھر کے پاکستانی ان کے اس جہاد میں ان کے ہم سفر ہیں روتھ جیکب،پی ٹی آئی کے پرویز زاہد، علامہ نیاز احمد صدیقی، کونسلر عنصر خان، مولانا سرفراز مدنی ، سید علی عباس بخاری، علامہ اشفاق عالم قادری اور ڈاکٹر رحیق احمد عباسی نے بھی ڈاکٹر طاہر القادری کی امت مسلمہ کے لیے خدمات پر خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ برطانیہ سمیت دنیا بھر میں بین المذاہب ہم آہنگی اور بھائی چارے کے فروغ کے لیے ان کی علمی و تحقیقی خدمات نہ قابل بیان ہیں مغربی معاشرے اور میڈیا کو ڈاکٹر طاہر القادری کی تقریر و تصنیف کی بدولت دہشت گردی کے حوالے سے اسلامی نقطہ نظر سمجھنے میں مدد ملی ہے طاہر القادری کادہشت گردی کے خلاف فتوی، محمدﷺ رحمت اللعالمین جیسی انگریزی میں مدلل کتابوں سمیت ویمبلے ایرینا اور ایکس ایل سنٹر میں دہشت گردی، انتہاپسندی اور بنیاد پرستی کے خلاف مضبوط اور جرات مند موقف نے مغربی ممالک میں آباد مسلمانوں کے اندر اعتماد پیدا کیے جب کہ زیر تعلیم مسلم نوجوان نسل کو بھی وہ علمی و تحقیقی مواد میسر آیا جس کی بدولت وہ جرات اور اعتماد سے اپنے دین پر ثابت قدم رہتے ہوئے مقامی معاشروں میں روز مرہ زندگی کی ذمہ داریاں انجام دینے کے قابل ہوئی مقررین نے حکومت پاکستان سے دہشت گردوں سے مذاکرات کے عمل پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے اسے دین اور ملک دشمنوں کے ہاتھ مضبوط کرنے کے برابر قرار دیا...