مقبول خبریں
ن لیگ برطانیہ و یورپ کا نواز شریف،مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی سزائیں معطل ہونے پر اظہار تشکر
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
چادر اوڑھ تحریک کے زیر انتظام میلاد النبیؐ کانفرنس،پیر کبیرعلی شاہ اورسجاد کریم کی شرکت
بولٹن...چادر اوڑھ تحریک انٹر نیشنل یوکے کے زیر انتظام ایک مقامی ہال میں میلاد النبیؐ کانفرنس کا انعقاد ہوا اور اس کانفرنس میں زیر بحث موضوع حجاب بارے میں تھا،نظامت کے فرائض علامہ عظیم جی نے سر انجام دیئے،آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا یہ سعادت ظہور احمد کو نصیب ہوئی،مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب کرنے ہوئے ممبر آف یورپین پارلیمنٹ ڈاکٹر سجاد حیدر کریم نے کہا کہ آج کے اس روحانی اور با برکت موقع پر وہ علما دین کے درمیان اپنے آپ کو خوش نصیب انسان سمجھتے ہیں،انہوں نے کہا کہ آج کا موضوع حجاب ہے تو اس بارے میں یہ کہتا چلوں کے جیسا پہلے ہی فرانس میں پابندی لگائی جا چکی ہے اور یورپ کے مختلف ممالک میں اس پر قانون سازی کا عمل شروع ہے اور ہم خوش قسمت ہیں کہ برطانیہ میں حجاب بارے کوئی پابندی نہیں ہے لیکن اگر ہم نے الیکشن میں اپنے ووٹ کا صحیح استعمال نہ کیا اورUKIPپارٹی کو موقع دیا کہ وہ پارلیمنٹ تک پہنچ جائے تو مستقبل میں مسائل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے لہٰذا تمام ایشیائی باشندوں کو الیکشن میں بھرپور حصہ لیتے ہوئے اپنے ووٹ کا استعمال کر کے اس پارٹی کا راستہ روکنا چاہیے،کانفرنس کی صدارت پیر سید محمد کبیر علی شاہ گیلانی مجددی سجادہ نشین آستانہ عالیہ چورہ شریف نے روحانی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ زمانہ جاہلیت میں عورت کو گھر کی لونڈی سمجھا جاتا تھا اور اس کے ساتھ غلامانہ سلوک کیا جاتا تھا لیکن ہمارے آخری نبی الزمانؐ نے عورت کو اسلام میں جائز اور اعلیٰ مقام دیا اور عزت نفس بحال کی،انہوں نے مزید کہا کہ عورت کی اہمیت کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے ہر کامیاب مرد کے پیچھے عورت کا ہاتھ ہوتا ہے اپنے جسم کو ڈھانپنا عورت کی حیاء ہے،انہوں نے مزید کہا کہ ہمارے معاشرے میں دوسری بڑی لعنت منشیات فروشی ہے اس لعنت سے نوجوان نسل تباہ ہو رہی ہے،میدیا،عالم دین،سیاستدانوں،سماجی کارکنوں اور کمیونٹی رہنمائوں کو مل کر اس کے خلاف جہاد کرنا چاہیے اور منشیات سے کمائی دولت سے حج و عمرہ کی ادائیگی بالکل حرام ہے،آخر میں انہوں نے کہا کہ الحمداللہ میں پچیس سالوں سے برطانیہ آ رہا ہوں آج تک کوئی شخص انگلی نہیں اٹھا سکتا کہ ہم نے چندہ مانگنے کیلئے ہاتھ پھیلائے ہوں،ہم چندے نہیں کندھے کے محتاج ہیں،دہشت گردی کرنے والے مسلمان تو دور کی بات انسان کہلانے کے بھی لائق نہیں،ہمارا پیغام محبت،امن و آتشی ہے اور اسکو ہم دنیا بھر میں پھیلانے کیلئے مصروف عمل ہیں،کانفرنس سےخطاب کرتے ہوئے علامہ ظفر فراشوی نے کہاکہ حضور پاکؐ کی بارگاہ اقدس میں گلدستہ نعت پیش کرنے والے نعت خواں جو ڈانس کرتے ہیں ہم انکی بھرپور مذمت کرتے ہیں،پروفیسر سعود ہزاروی نے بھی خطاب کیا،آخر میں انتظامیہ کی جانب سے خواتین و حضرات میں لنگر تقسیم کیا گیا،یاد رہے اس کانفرنس میں نوجوان لڑکیوں،بچوں اور عورتوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ (بیورو رپوڑٹ: فیاض بشیر)