مقبول خبریں
پاکستانی کمیونٹی سنٹر اولڈہم میں بیڈمنٹن ٹورنامنٹ کا انعقاد، برطانیہ بھر سے 20 ٹیموں کی شرکت
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
صحافی جہاد پر نکلےسپاہی کی طرح ہوتا ہےجسکی دیکھ بھال ریاست کی ذمہ داری ہے: امجد ملک
راچڈیل ... میڈیا معاشرے کی بناوٹ اور بگاڑ میں اہم کردار ادا کرتا ہے، ایک صحافی محض ایک ملازم نہیں ہوتا بلکہ جہاد پر نکلے ایک سپاہی کی طرح ہوتا ہے جس نے ایسا کام سرانجام دینا ہوتا ہے جو پورے معاشرے کیلئے سود مند ہو اسلئے خبر عوام تک بھیجنے سے پہلے اس کے اثرات بارے سوچنا بھی آج کے صحافی کی ذمہ داری بن چکی ہے۔ ان خیالات کا اظہار راچڈیل لا ایسوسی ایشن کے صدر بیرسٹر امجد ملک سے کشمیر لنک لندن کے چیف ایڈیٹر مبین چوہدری اور چیف رپورٹر اکرم عابد کے مابین ایک ملاقات میں کیا گیا۔ امجد ملک نے کہا یہ امر انتہائی خوش آئیند ہے کہ برطانیہ میں ہمارے صحافی دوست ذمہ داری کیساتھ کام کر رہے ہیں، ایسا بہت کم ہوا کہ کوئی خبر ایشو بنی ہو۔ انہوں نے کہا کہ آپ لوگ چونکہ صحافت کی سیاست سے بھی وابستہ ہیں اسلئے آپ پر دوہری ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ ایسا رویہ رکھیں جس سے کمیونٹی بھی خوش رہے اور آپ کی صحافی برادری بھی مطمئن رہے۔ مبین چوہدری نے انہیں بتایا کہ پاکستان پریس کلب کے پلیٹ فارم سے اس امر کا خاص طور پر خیال رکھا جاتا ہے کہ کوئی دوست منفی پروپیگنڈہ کرکے کسی کو زچ نہ کرے۔ امجد ملک نے کہا کہ انکے خیال میں صحافیوں کی انشورنس کے معاملے پر توجہ دینے کی ضرورت ہے انہوں نے کہا وہ برطانیہ میں صحافیوں کی سب سے پرانی تنظیم پاکستان جرنلسٹ ایسوسی ایشن کے لیگل ایڈوائزر کے طور پر مختلف امور پر کام کر رہے ہیں جن کا براہ راست فائدہ صحافی برادری کو ہی ہوگا۔ مبین چوہدری جو پاکستان پریس کلب کے سینئر نائب صدر بھی ہیں اور اکرم عابد جو کلب کے سابقہ نائب صدر ہیں امجد ملک کی تجاویز سے اتفاق کیا کہ پاکستانی ہائی کمیشن یا قونصلیت آفس اکثر اپنے صحافیوں سے گلہ کرتے ہیں لیکن یہ نہیں دیکھتے کہ وہ انہیں کیا فائدہ دے سکتے ہیں۔ امجد ملک نے کہا انکی تجویز کے مطابق دونوں نمائندہ تنظیموں کیلئے ہائی کمیشن میں جگہ مخصوص ہونی چاہیئے جہاں وہ میٹنگز وغیرہ کر سکیں۔ ان موقع پر یہ بھی تزکرہ ہوا کہ ایسی غیر سرکاری تنظیمیں موجود ہیں جنہیں ہائی کمیشن اپمی مرضی سے اپنے دفاتر میں فنکشن کرنے کی ناصرف اجازت دیتا ہے بلکہ معاونت بھی کرتا ہے تو صحافی جو ملک و قوم کے بے لوث سپاہی ہیں انہیں جگہ کیوں فراہم نہیں کی جا سکتی۔ اس موقع پر یہ امر بھی زیر بحث آیا کہ پاکستانی صحافیوں کی طرح انہیں قومی شناخت دی جانی ضروری ہے اس سلسلے میں دونوں تنظیموں کو اداروں سے وابستہ ریگولر کام کرنے والے صحافیوں کی لسٹ تیار رکھنی چاہیئے تاکہ وزیر اعظم پاکستان سے کسی موقع پر یہ ڈیمانڈ کی جا سکے کی فرائض کی ادائیگی کیلئے پاکستان جانے والے صحافیوں کو پی آئی اے کے کرائوں میں چھوٹ دی جائے۔ اس ملاقات میں یہ بھی طے پایا کہ پی جے اے اور پریس کلب کے دوست آپس میں اتحاد اور اتفاق کو قائم رکھیں جسکی کمیونٹی کو اشد ضرورت ہے اور ملکر ایک ایسی کٹ تیار کریں جو ہر ورکنگ جرنلسٹ کی ضرورت ہے اسکے تحت خدونخواستہ اس پر برطانیہ میں یا کسی اور ملک میں برا وقت آجاتا ہے تو اسے اور اسکے خاندان کو علم ہو کی اس صورتحال میں انہوں نے کیا کرنا ہے۔ اس سلسلے میں برطانیہ کی نیشنل یونین آف جرنلسٹ اور پاکستان میں پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس سے رابطے بڑھانے کی ضرورت پر اتفاق کیا گیا۔ اس موقع پر بیرسٹر امجد ملک جو وکیل ہونے کیساتھ ساتھ مسلم لیگ ن لائرز ونگ برطانیہ کے چیئرمین اور اچھے رائٹر بھی ہیں نے دونوں صحافیوں کو اپنی کتاب "روڈ ٹو جسٹس" تحفے میں دی۔ مبین چوہدری اور اکرم عابد نے امجد ملک کو راچڈیل لا ایسوسی ایشن کی تاریخ کا پہلا ایشیائی صدر بننے پر مبارکباد دی اور پھول پیش کئے۔ (بیورو رپورٹ: فیاض بشیر)