مقبول خبریں
نائجیریا کمیونٹی ایسوسی ایشن کا میئر چیئرٹی فنڈریزنگ ڈنر کا اہتمام ،مئیر کونسلر محمد زمان کی خصوصی شرکت
بریگزیٹ بحران :کنزرویٹو پارٹی کی تین خواتین ممبر کی آزاد گروپ میں شمولیت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میئرآف لوٹن (برطانیہ) نے شاہد حسین سید کو کمیونٹی سروسز پر شیلڈ پیش کی
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
راجہ نجا بت حسین کی صدر آزاد کشمیر سردار مسعود اور وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے ملاقات
میں روشنی سے اندھیرے میں بات کرتا ہوں!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
طالبان کی نابودی تک چین سے نہیں بیٹھیں گے،++ علامہ عبداللہ مطہری
کراچی… مجلس و حدت مسلمین کے رہنماء عبداللہ مطہری نے کہا ہے کہ حکومت سندھ نا اہل اوربدعنوان ہے وزیر اعلیٰ قائم علی شاہ سمیت سندھ کے تمام وزراء اور کابینہ کو برخاست کیا جائے۔دہشت گرد آزاد ی سے گھوم رہے ہیں بارہ گھنٹوں میں تین شیعہ عمائدین کو ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بنایا گیا ہے،جبکہ گزشتہ ماہ سے اب تک 52اہل تشیع دہشتگردی کا نشانہ بن چکے ہیں ۔ایف سی اہلکاروں سمیت میڈیا کے دفاتر پر ہونے والے حملوں کی مذمت کرتے ہیں ،اسلام دشمن طالبان کی نابودی تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے شیعہ افراد کی ٹارگٹ کلنگ اور حکومتی نا اہلی کے خلاف کراچی و حدت ہاؤس صوبائی دفتر میں علامہ علی انور ،علامہ مبشر حسن،علی حسین نقوی سمیت دیگر کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا ان کا کہنا تھا کے شہر قائدر یاستی اداروں کی مبینہ سر پرستی میں ملت جعفریہ کے عمائدین کی مسلسل ٹارگٹ کلنگ کی جا رہی ہے۔ گذشتہ روز سے اب تک شہاب حیدر نقوی ،عظیم حسین اور فیروز حسین دہشت گردی کا نشانہ بنا دیا گیا ہے اور قاتل دندناتے پھر رہے ہیں۔حکومت سندھ سمیت ریاستی ادارے کالعدم دہشت گرد گروہوں کے خلاف سخت اقدامات کرنے سے گریزاں ہیں اور دہشت گرد گروہ شہر میں معصوم انسانی جانوں کے خون سے ہولی کھیلنے میں مصروف عمل ہیں، سندھ حکومت ایک طرف جہاں کالعدم دہشت گرد گروہوں کے خلاف کسی قسم کی کاروائی کرنے سے قاصر ہے تو دوسری طرف سندھ حکومت نے خطر ناک کالعدم دہشت گرد گروہوں کے سرغنہ دہشت گردوں کو سیکورٹی کے لئے سرکاری پروٹوکول فراہم کر رکھا ہے جو اس بات کی واضح دلیل ہے کہ سندھ حکومت براہ راست ملت جعفریہ کی نسل کشی میں ملوث ہے۔