مقبول خبریں
راچڈیل، ساہیوال جیسے شہروں کے رشتے کو مثالی بنایا جائیگا: ممبر پنجاب اسمبلی ندیم کامران
پارٹی رہنما شعیب صدیقی کو پاکستان تحریک انصاف پنجاب کا سیکریٹری جنرل بننے پر مبارک باد
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
ہم نے سچ کو دیکھا ہے جھوٹ کے جھروکوں سے!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
رجنی کانت کے پوسٹر چھاپنے کیلئے اپنا گھر بیچ دیا !!
چنائی ...کیا ایسا کوئی پرستار ہو سکتا ہے جو اپنے پسندیدہ اداکار کے پوسٹر شائع کرنے کیلئے اپنا گھر فروخت دے ؟ ہاں ضرور ہو سکتا ہے ، جب یہ اداکار اور کوئی نہیں بلکہ سپر سٹار رجنی کانت ہوں۔ ایمسٹرڈیم سے تعلق رکھنے والی بھارتی نژاد خاتون رک کالسی نے اداکار رجنی کانت کے مداحوں پر ایک دستاویزی فلم بنائی ہے جس میں چنائی کے رہائشی محنت کش گوپی کا ذکر ہے ۔ گوپی کو ان کے علاقے کے ’’رجنی فین کلب ‘‘میں برتری حاصل کرنے کیلئے سپر سٹار کے 1500 پوسٹر شائع کرنے کا حکم دیا گیا۔ یہ اس وقت کی بات ہے جب 2005 میں رجنی کانت کی فلم ‘چندرمکھی’ ریلیز ہو رہی تھی۔گوپی نے اپنا چھوٹا سا گھر ایک لاکھ روپے میں فروخت کر کے پوسٹر چھپوائے ۔ وہ دو ماہ تک اپنے پورے خاندان کے ساتھ فٹ پاتھ پر رہا۔رجنی کانت کے پرستار انکی فلم ریلیز ہونے پر منت مانگتے اور عبادت کرتے ہیں۔ دنیابھر میں رجنی کانت کے فین کلب کی تعداد 66000تک پہنچ چکی ہے ۔یہ تمام کلب رجنی کانت کی فلمیں ریلیز ہونے پر منت مانگتے اور عبادت کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ وہ سپر سٹار کے نام سے چندہ جمع کر کے غریبوں کو اور معذوروں کو صدقہ دیتے ہیں جبکہ خون کے عطیات بھی جمع کئے جاتے ہیں ۔ان کلبوں میں 16 سال سے لیکر 90 سال کی عمر کے افراد شامل ہیں۔