مقبول خبریں
راچڈیل مساجد کونسل کی طرف سے مئیر کونسلر محمد زمان کی مئیر چیرٹیز کیلئے فنڈ ریزنگ ڈنر کا اہتمام
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
یورپی یونین غیر ملکی ورکرز کو ملازمتیں دینے کیلئے کمپنیوں کو بھاری رشوت دے رہی ہے
برسلز برطانوی اداروں کو غیر ملکی ورکرز کو ملازم رکھنے پر ایک ہزار پونڈ تک رشوت کی پیشکش کرتاہے۔اسی طرح یورپی کمیشن سکیم کے تحت برطانیہ میں ملازمت حاصل کرنے کیلئے ہزاروں نوجوانوں کو ایک ہزار100 پونڈ کی پیشکش کی جاتی ہے۔ یہ غیر معمولی اقدام برطانوی حکومت کی جانب سے اداروں کو برطانوی شہریوں کو ملازمتیں دینے کی ترغیب دینے کی کوششوں کو ناکام بنانے کا حربہ خیال کئے جاتے ہیں۔ان خیالات کا اظہار ڈیلی میل کو انٹرویو دیتے ہوئے برطانوی وزیر تجارت ماتھیو ہنکوک نے کیا ہے انہوں نے کہا کہ اداروں کافرض ہے کہ وہ ہنر مند غیر ملکی ورکرز کو ملازمت فراہم کرنے کا آسان آپشن استعمال کرنے کے بجائے برطانوی نوجوانوں کوملازمتیں فراہم کریں۔گزشتہ روز بھی یورپی یونین سکیم کے تحت برطانیہ میں8 لاکھ ملازمتوں کا اشتہار دیا گیاہے یہ تعداد پورے یورپ میں دستیاب ملازمتوں کے نصف کے مساوی ہے۔یہ ترغیبات ایسے وقت شروع کی گئی ہیں جب برطانیہ میں نصف سے زیادہ ملازمتیں غیر ملکیوں کو دی جارہی ہیں۔تاہم یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ کتنے لوگ یورپی سکیم سے استفادہ کریں گے۔یوکے انڈیپنڈنس پارٹی کے ذرائع کے مطابق یورپی یونین غیر ملکی ورکرز کو ملازمتیں دینے کیلئے کمپنیوں کو بھاری رشوت دے رہی ہے۔