مقبول خبریں
اولڈہم کے نوجوانوں کی طرف سے روح پرور محفل، پیر ابو احمد مقصود مدنی کی خصوصی شرکت
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
آزادی کے بیس کیمپ سے صحیح معنوں میں تحریک آزادی کے لئے آواز نہیں بلند کی جا سکی: بیرسٹر، لارڈ
اسلام آباد ...آزاد کشمیر کے سابق وزیراعظم وپاکستان پیپلز پارٹی آزاد کشمیرکے مرکزی رہنماء بیرسٹر سلطان محمود چوہدری اور برطانوی ہائوس آف لارڈز کے رکن لارڈ نذیر احمد نے کہا ہے کہ اس وقت مسئلہ کشمیر کو اندرون و بیرون ممالک میں جارحانہ انداز میں اٹھانے کی ضرورت ہے جبکہ آزاد کشمیر میں بیس کیمپ کے حکمرانوں کی کرپشن ، لوٹ ماراور اقرباء پروری کی وجہ سے آزادی کے بیس کیمپ سے صحیح معنوں میں تحریک آزادی کے لئے آواز نہیں بلند کی جا سکی۔ان خیالات کا اظہاردونوں رہنمائوں نے اتوار کو اسلام آباد میں بیرسٹرسلطان محمود چوہدری کی رہائشگاہ پرایک پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر سابق مشیر حکومت سردار امتیاز خان اور دیگر بھی موجود تھے۔ لارڈ نذیر احمد نے کہا کہ میرا تعلق آزاد کشمیر سے ہے اسلئے میں وہاں اتنی بڑی کرپشن ہوتے نہیں دیکھ سکتا۔انھوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کو عوام بناتے ہیں اور پارلیمنٹ کو یہ حق حاصل ہونا چاہیے کہ وہ جب چاہے کرپٹ حکومت کو ختم کرسکیں تاکہ یہاں ایک ایسی حکومت قائم ہو سکے جو اپنی توانائیاں مقبوضہ کشمیر کی آزادی کے لئے سرف کرسکے۔لارڈ نذیر احمد نے کہا کہ اوورسیز پاکستانیوں کے بیگ نہ کھولنے اور سوٹ کیس نہ کھولنے پر مکمل کلیئرنس لینے کیلئےرشوت لی جاتی ہے۔ انہوں نے کہا وزیراعظم میاں نوازشریف اور وزیرداخلہ چوہدری نثار سے جلد ملاقات کروں گا جس میں ائیرپورٹ پر اوورسیز پاکستانیوں کی مشکلات سے آگاہ کروں گا،ائرپورٹ کرپشن کا گڑھ بن چکا ہے، 20سال بعد بھی وہاں پر کوئی اصلاحات نہیں کی گئیں۔ اس موقع پر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا کہ آزاد کشمیر حکومت کی نا اہلی،کرپشن اور لوٹ مار کی وجہ سے آزادی کے بیس کیمپ سے مسئلہ کشمیر کے اس فیصلہ کن موڑ پر آواز بلند نہیں ہو رہی ہے۔ لہذا میں ڈیڑھ کروڑ کشمیر عوام کے موقف کو عالمی سطح پر پیش کرنے کے لئے یورپ جا رہا ہوں اور وہاں پر میںکشمیری عوام کو موقف مختلف فورمز کے سامنے پیش کرونگا ۔جس مسئلہ کشمیرکو بالخصوص اس وقت جنوبی ایشیاء میں امن اور مسئلہ افغانستان کے حل کرنے کے سلسلے میں کشمیر کی اہمیت پر اپنا موقف پیش کروں گا۔ جس میں یورپی پارلیمنٹ، یورپی یونین، عالمی عدالت انصاف، برطانوی پارلیمنٹ ، فرانس اور ہالینڈ کی وزارتخارجہ، ممبران پارلیمنٹ، انسانی حقوق کی تنظیموں کے ساتھ ساتھ یورپی ممالک کے دارالحکومتوں میں بھارتی سفارتخانوں کے سامنے مظاہرے بھی کیے جائیں گے اور پورے یورپ اور انٹرنیشنل کمیونٹی کے ضمیر کومقبوضہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالی پر جنجھوڑکر رکھ دوں گا ۔