مقبول خبریں
صدر یورپین مسلم کونسل میاں عبد الحق اور یو کے اسلامک مشن صادق کھوکھر کا ناروے پہنچنے پر والہانہ استقبال
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
نجم سیٹھی کو دوبارہ چیئرمین پی سی بی بنادیا گیا، فیصلہ غیر جمہوری ہے‘ ذکاء اشرف
لاہور ... پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئرمین چودھری ذکاء اشرف نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت کا فیصلہ غیر جمہوری ہے۔ جمہوری حکومت کے ہاتھوں جمہوریت کا قتل کیا گیا‘ قذافی سٹیڈیم لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چودھری ذکاء اشرف نے کہا کہ کرکٹ بورڈ میں بار بار تبدیلیاں کرکے دنیا کو منفی پیغام پہنچایا گیا۔ آسٹریلیا نے پہلے بھی تنقید کی تھی کہ نہ تو پاکستان میں استحکام ہے اور نہ ہی کرکٹ بورڈ میں۔ ذکاء اشرف کا کہنا تھا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کا آئین ہم نے ایک سال میں بنایا اور آئین کے آنے کے بعد آئی سی سی کے احکامات پر عمل درآمد کروایا گیا۔ آئی سی سی چاہتا ہے کہ حکومت کا بورڈ کے معاملات سے کوئی تعلق نہ ہو۔ ان کا کہنا تھا کہ عہدے سے ہٹانے کے حوالے سے مجھے باضابطہ طور پر آگاہ نہیں کیا گیا۔ یہ فیصلہ بظاہر عدالتی احکامات کی خلاف ورزی ہو سکتا ہے۔ اس فیصلے سے آئی سی سی میں پاکستان کا موقف مزید کمزور ہونے کا بھی خدشہ ہے اور حکومت کے اس فیصلے سے بھارتی بورڈ کو مزید فائدہ ہوگا جبکہ پاکستان مزید تنہائی کا شکار ہوا ہے۔ معاملے کا باریک بینی سے جائزہ لے رہا ہوں دیکھنا یہ ہے کہ آئی سی سی کا اس پر کیا ردعمل آتا ہے۔ فیصلے کیخلاف قانونی چارہ جوئی کمیٹی کا فیصلہ دیکھ کر مشاورت کے بعد کروں گا۔ انہوں نے کہا کہ وہ بدستور چیئرمین پی سی بی ہیں،حکومتی فیصلے سے ان کی پوزیشن پر اثر نہیں پڑا،مشاورت کے بعد قانونی چارہ جوئی کا فیصلہ کریں گے۔چوہدری ذکاء اشرف سنگاپور سے وطن واپسی کے بعد لاہور کے ایک ہوٹل میں آئے تو تھے ایک تقریب میں شرکت کرنے،جہاں کرکٹر وسیم اکرم بھی بطور مہمان خصوصی اپنی غیرملکی اہلیہ کے ساتھ براجمان تھے۔ذکاء اشرف کو تقریب میں چیئرمین پی سی بی والا ہی استقبال ملا ،چہرے پہ اطمینان کا یہی مطلب تھا کہ کچھ ہی دیر پہلے منصب سے ہٹائے جانے کے فیصلے سے بے خبر ہیں، یہ بری خبر صحافیوں نے انہیں سنائی تو ان کی حیرانی اور پریشانی فطری بات تھی۔ ان کا پہلا ردعمل اس فیصلے کو ماننے سے انکار کا تھا‘ذکاء اشرف نے حکومتی اقدام کو بادی النظر میں عدالتی احکامات کی خلاف ورزی بھی قرار دیا، تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ بگ تھری کے حوالے سے دس سال بعد پتہ چلے گا کہ پاکستان حق اور انصاف پر تھا، آئی سی سی والے تو پہلے ہی یہ کہتے تھے کہ آپ کے یہاں تو ہر 6ماہ بعد نیا بندہ آجاتا ہے، بات کس سے کریں؟ذکااشرف کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت کا فیصلہ غیر جمہوری ہے، جمہوری حکومت کے ہاتھوں جمہوریت کا قتل کیا گیا، پی سی بی کا آئین ہم نے ایک سال میں بنایا، اس آئین کے آنے کے بعد آئی سی سی کے احکامات کے مطابق اس پر عملدرآمد کرایا، ذکا اشرف کا مزید کہنا تھا کہ آئی سی سی چاہتا ہے کہ حکومت کا بورڈ کے معاملات سے تعلق نہ ہو جو آئی سی سی پہلے تھا وہ اب نہیں رہا، اب بھارت آئی سی سی کا سربراہ ہے، آسٹریلیا نے پہلے بھی تنقید کی تھی کہ نہ پاکستان میں استحکام ہے اور نہ کرکٹ بورڈ میں۔ادھر نجم سیٹھی کو چیئرمین پی سی بی بنادیا گیا ہے ‘ترجمان پی سی بی کے مطابق لاہور میں نجم سیٹھی نے پیرکی شام اپنے عہدے کا چارج سنبھال لیا ہے- جسکے بعد نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ وہ یہ غلط فہمی دور کرنا چاہتے ہیں کہ یہ کوئی عارضی یا ایڈہاک کمیٹی نہیں ہے، اب ان کے پاس مکمل اختیارات موجود ہیں۔انھوں نے کہا کہ وزیراعظم نے اپنے آئینی اختیارات استعمال کیے جو اسلام آباد ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ نے بھی تسلیم کیے کہ وزیرِ اعظم کے پاس یہ اختیار ہے اور اسی اخِتیار کے تحت انھوں نے یہ کمیٹی قائم کی ہے۔ نجم سیٹھی نے کہا کہ انھیں پاکستان کرکٹ بورڈ کا نیا آئین بنانے کی ذمہ داری دی گئی ہے جس میں اصلی انتخاب ہوں کیونکہ پچھلا آئین صرف ایک شخص کے لیے بنایا گیا تھا۔