مقبول خبریں
سیرت النبیؐ کے پیغام کو دنیا بھر میں پہنچانے کے لئے میڈیا کا کردار اہم ہے:پیر ابو احمد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
بری میں ممبران اسمبلی کی تحریک حق خودارادیت کی دستخطی مہم کی بھرپور پذیرائی
بری ... بری کے دونوں ممبران پارلیمنٹ،نارتھ ویسٹ سے یورپی پارلیمنٹ کے امیدوار کشمیری پاکستانی کونسلروں اور کمیونٹی لیڈروں نے تحریک حق خود ارادیت یورپ کی کشمیر پٹیشن پر دستخطی مہم میں بھرپور معاونت کرتے ہوئے مسئلہ کشمیر کو برطانوی اور یورپی ایوانوں میں اٹھانے کا وعدہ کیا ہے۔بری نارتھ ویسٹ سے کنزرویٹو ممبر پارلیمنٹ ڈیوڈ نٹالی اور بری سائوتھ سے لیبر شیڈو سیکرٹری آئیون لیوس ایم پی نے کشمیر پٹیشن پر کمیونٹی لیڈروں کی موجودگی میں دستخط کر کے اپنے شہر میں دستخطی مہم کی ابتدا کی اس موقع پر خصوصی طور پر مانچسٹر میں پاکستانی قونصلر جنرل ڈاکٹر ظہور احمد اور کمیونٹی ویلفیئرقاضی ساجد محمود،وزیر اعظم آزاد کشمیر کے مشیر سردار عبدالرحمان خان،یورپی پارلیمنٹ کے امیدوار کونسلر افضل خان،واجد خان اور بری نارتھ سے لیبر پارٹی کے پارلیمانی امیدوار کونسلر جیمس نے بی شرکت کی جبکہ تحریک کے وائس چیئرمین امجد حسین مغل،مقامی کونسلر شاہین ہارون راجہ،کونسلر تیمور طارق اور سابق کونسلر اعجاز احمد سمیت مقامی رہنمائوں عظمت حسین،ڈاکٹر سلیم شریف،راجہ محمد ریاض،راجہ طارق محمود،راجہ اظہر محمود،ذاکر سلیمی اور راجہ ضیاء الحق سمیت متعدد مقامی رہنمائوں نے اپنے شہر میں اس پٹیشن پر دستخط کروانے کی ذمہ داری لیتے ہوئے تحریک کے چیئرمین راجہ نجابت حسین اور انکی پوری ٹیم کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے ہر سطح پر بھرپور معاونت کی یقین دہانی کرائی،جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت یورپ کے زیر اہتمام بری کے جناح کمیونٹی سینٹر میںمسئلہ کشمیر اور برطانوی پارلیمنٹ و حکومت کی ذمہ داریوں کے حوالے سے منعقدہ کشمیر سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے بری نارتھ کے ممبر پارلیمنٹ ڈیوڈ نٹالی نے تفصیلاً خطاب کیا اور کہا کہ مسئلہ کشمیر ایک نہایت ہی پیچیدہ مسئلہ ہے مگر برطانوی حکومت اور پارلیمنٹ کا اس مسئلے کو حل کرانے میں ایک خصوصی کردار ہے جس کیلئے راجہ نجابت حسین اور انکے ساتھیوں کی کاوشوں اور آل پارٹیز کشمیر گروپ کی معاونت سے ہم پارلیمنٹ کے اندر اسے ماضی میں ایک بحث اور سوالوں کے ذریعے اجاگر کر چکے اور اس مہم سے پارلیمنٹری گروپ اور کشمیر دوست ممبران پارلیمنٹ جس انداز میں تعاون کر رہے ہیں اس کا ایک موثر اثر ہو گا اور بہت جلد کشمیریوں کے حق خود ارادیت اور دنیا کے اس اہم خطے میں امن اور خوشحالی کیلئے برطانوی پارلیمنٹ بحث کریگی،انہوں نے کہا کہ وہ آج تک ہر سطح پر مسئلہ کشمیر کے ساتھ وابستہ رہے ہیں اور آئندہ بھی تحریکی عہدیداروں اور بری کے عوام کی نمائندگی کرتے ہوئے پارلیمنٹ میں آواز بلند کرینگے انہوں نے اس موقع پر15ستمبر2011کی کشمیر بحث پر پارلیمنٹ میں اپنی تقریر کا حوالہ دیتے ہوئے تحریک حق خود ارادیت کے عہدیداروں کی طرف سے مہیا کی گئی انفارمیشن پراپنے خطاب اور آئندہ کے لائحہ عمل کے حوالے سے اپنی طرف سے انہیں کشمیر ایوارڈ دینے پر شکریہ ادا کیا اور کہا کہ وہ مسئلہ کشمیر کو انسانی حقوق اور انصاف کے تقاضوں کے مطابق حل کروانے کیلئے برٹش کشمیریوں کی جدو جہد میں معاونت کر رہے ہیں،ڈیوڈ نٹالی نے اس موقع پر خوشی کا اظہار کیا کہ تقریب میں جہاں کشمیریوں کے مختلف نظریات کے لوگ موجود ہیں وہاں مسئلہ کشمیر کی وجہ سے کنزرویٹو اور لیبر پارٹی کے مقامی رکابرین اکٹھے بیٹھ کر کشمیریوں کی نمائندگی کا حق ادا کر رہے ہیں۔بری سائوتھ کے لیبر ممبر پارلیمنٹ اور شیڈو سیکرٹری آئیون لیوس نے اپنے خطاب میں کشمیر یوں کے حقوق اور انکی جدو جہد کی بھرپور حمایت کرتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر کو انصاف اور حق کی بنیاد پر حل کرنے کی ضرورت ہے اقوام متحدہ کی قرار دادیں اور عالمی برادری کی خاموشی کے باوجود برطانوی سیاستدان کی بڑی تعداد مسئلہ کشمیر کے پر امن حل اور کشمیریوں کی خواہشات کا احترام کرتی ہے اور ہم تحریک کی اس مہم کو پارلیمنٹ کے اندر دیگر ہم خیال ساتھیوں سے مل کر کوشش کریں گے کہ پارلیمنٹ مسئلہ کشمیر پر3گھنٹے کی بحث کر کے بھارت اور پاکستان کے علاوہ عالمی برادری کو بھی دیگر اقوام کی طرح آزادی سے رہنے کا حق مل سکے۔انہوں نے بری نارتھ کے لیبر امید وار کونسلر جیمس کے ہمراہ کشمیر پٹیشن پر دستخط کرتے ہوئے راجہ نجابت حسین اور انکی ٹیم کی طرف سے دیئے گئے کشمیر ایوارڈ پر شکریہ ادا کیا اور کہا کہ مقامی کونسلروں تیمور طارق اورشاہین ہارون راجہ انہیں مسلسل مقبوضہ کشمیر کے حالات اور برٹش کشمیریوں کے جذبات سے آگاہ کرتے رہتے ہیں،انہوں نے تحریکی رہنمائوں کو یقین دلایا کہ وہ لیبر پارٹی کی اعلیٰ قیادت کو بھی کشمیریوں کے جذبات سے آگاہ کرینگے۔ پاکستانی قونصلر ڈاکٹر ظہور احمد نے اپنے خطاب میں دونوں ممبران پارلیمنٹ تحریک حق خود ارادیت کے عہدیداروں اور مقامی کمیونٹی لیڈروں کی طرف سے کشمیر کے حوالے سے خصوصی دلچسپی پر انہیں خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ وہ بے شک مانچسٹر میںسے آئے ہیں مگر حکومت پاکستان کی اس علاقے میں نمائندگی کرتے ہوئے مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے اور کمیونٹی کے مسائل کے حل کروانے میں ہر سطح پر تعاون کرینگے انہوں نے تمام کشمیریوں اور پاکستانیوں سے کہا کہ وہ اپنے ملک کے ساتھ وابستگی کے ساتھ ساتھ مقامی سیاستدانوں سے رابطوں کے علاوہ خود بھی مقامی سیاست میں مزید فعال کردار ادا کریں،وزیر اعظم آزاد کشمیر کے مشیر سردار عبدالرحمن خان نے تاریخی حوالوں سے مسئلہ کشمیر اور اقوام متحدہ کے کردار پر روشنی ڈالی۔یورپی پارلیمنٹ کے نارتھ ویسٹ سے لیبر امیدوار کونسلر افضل خان نے کہا کہ وہ تحریک آزادی کشمیر کے ساتھ سیاسی وجوہات کی بناء پر نہیں بلکہ ایک کشمیری ماں کے بیٹے کی حیثیت سے ریاست کی آزادی میں جدوجہد گزشتہ 30سال سے کر رہے ہیں اور یورپی پارلیمنٹ میں جا کر بھی اپنا حق ادا کرینگے،یورپی پارلیمنٹ کے ہی نارتھ ویسٹ سے پاکستانی نژاد امید وار واجد خان نے اپنے خطاب میں کہا کہ وہ تحریکی رہنمائوں کے ساتھ مل کر اپنی پارٹی،یورپی ممبران پارلیمنٹ اور عوامی سطح پر بھی بھرپور تعاون کرینگے جبکہ کشمیر پٹیشن کی دستخطی مہم میں بھی بھرپور معاونت کرینگے،مقامی کمیونٹی رہنما ڈاکٹر سلیم شریف ایم بی ای نے اپنے خطاب میں مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم کا ذکر کرتے ہوئے ممبران پارلیمنٹ پر زور دیا کہ وہ بھارت کیخلاف دبائو بڑھانے کیلئے حکومت اور پارلیمنٹ میں آواز بلند کریں،مقامی کونسلر اور تحریک کے یوتھ گروپ کے ڈپٹی چیئرمین کونسلر تیمور طارق نے کہا کہ وہ گزشتہ چار سال سے مسلسل تحریک آزادی کشمیر کی اس سفارتی جدو جہد میں متحرک ہیں اور انہیں اس بات کی بھی خوشی ہے کہ آج ان کے شہر میںتمام پارٹیوں کے کشمیری اور برٹش ملک مسئلہ کشمیر پر آواز بلند کر رہے ہیں کونسلر شاہین ہارون راجہ نے بری کی خواتین اور لیبر ارکان کی طرف سے تحریکی رہنمائوں کو بھرپور حمایت کا یقین دلاتے ہوئے اپنے شہر میں کشمیر پٹیشن پر دستخطی مہم کو کامیاب کرانے کا عندیہ دیا اور کہا کہ برطانیہ بھر میں کشمیری خواتین کو آگے آ کر مسئلہ کشمیر کی سفارتی مہم کو آگے بڑھانے میں بھرپور معاونت کرنی چاہئے،اس موقع پر تقریب کی صدارتحریک کے واس چیئرمین امجد حسین مغل نے کی اور تلاوت کلام پاک راجہ ضیا ء الحق نے کی۔تحریک کے چیئرمین راجہ نجابت حسین تفصیلاً برطانیہ بھر میں کشمیر پٹیشن پر دستخطی مہم پر بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ ہم ممبران پارلیمنٹ کی موجودگی میں جہاں کمیونٹی لیڈروں سے دستخط کروا کر انکی مقامی سطح پر ذمہ داریاں لگا رہے ہیں وہاں پر شہر میں جا کر ممبران پارلیمنٹ اور کونسلروں سے کشمیر پٹیشن پر دستخط کروا کر اس مسئلہ کو اجاگر کر رہے ہیں۔