مقبول خبریں
مکس مارشل آرٹ کونسل اور چیریٹی آرگنائزیشن کے زیر اہتمام تقریب کا انعقاد
بریگزیٹ بحران :کنزرویٹو پارٹی کی تین خواتین ممبر کی آزاد گروپ میں شمولیت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میئرآف لوٹن (برطانیہ) نے شاہد حسین سید کو کمیونٹی سروسز پر شیلڈ پیش کی
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
راجہ نجا بت حسین کی صدر آزاد کشمیر سردار مسعود اور وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے ملاقات
میں روشنی سے اندھیرے میں بات کرتا ہوں!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پاکستان خطہ میں امن کا خواہاں ہے ، پاکستان ایک مضبوط ، مستحکم اور خوشحال افغانستان دیکھنا چاہتا ہے ، ایاز صادق
اسلام آباد ۔ قومی اسمبلی کے سپیکر سردار ایاز صادق نے کہا ہے کہ پاکستان خطہ میں امن کا خواہاں ہے ، پاکستان ایک مضبوط ، مستحکم اور خوشحال افغانستان دیکھنا چاہتا ہے ، ایک مستحکم اور خوشحال افغانستان نہ صرف خطے بلکہ دنیا کے لیے امن و استحکام کے لیے ضروری ہے ۔وہ منگل کو پاکستان اور افغانستان کے لیے جرمنی کی طرف سے مقرر خصوصی نمائندے ڈاکٹر مائیکل کوچ سے پارلیمنٹ ہائوس میں ملاقات کے دوران بات چیت کررہے تھے ۔ ملاقات میں باہمی دلچسپی کے مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا۔ ڈاکٹر مائیکل کوچ سے گفتگو کرتے ہوئے سپیکر نے کہا کہ پاکستان جرمنی کی طرف سے ملک میں اقتصادی اور سماجی ترقی کے لیے دی جانے والی امداد کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان جرمنی کے ساتھ پائیدار اور وسیع البنیاد شراکت داری کا خواہاں ہے۔ انہوں نے دونوں ممالک کے پارلیمانوں کے مابین تعاون کو بڑھانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہاکہ دونوں ممالک کے اراکین پارلیمنٹ کے مابین رابطوں میں فروغ دونوں ممالک کے عوام کو قریب لانے اور موجودہ تعلقات کو مستحکم بنانے میں اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔ انہوں نے یورپین یونین میں پاکستان کو جی ایس پی پلس کا سٹیٹس حاصل کرنے میں جرمنی کی حمایت کو سراہا۔خطے میں امن کا حوالہ دیتے ہوئے سپیکر نے کہا کہ پاکستان امن پر یقین رکھتا ہے اور ہمسایہ ممالک سے برابری کی سطح پر خوشگوار اور دوستانہ تعلقات چاہتا ہے۔ انہوںنے کہا کہ دہشتگردی نے خطے کو بری طرح متاثر کیا ہے ۔ انہوں نے خطے کے معاشی استحکام کے لیے تمام سٹیک ہولڈر ز کی مشترکہ کوششوں کی ضرورت پر زوردیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک مضبوط ، مستحکم اور خوشحال افغانستان دیکھنا چاہتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایک مستحکم اور خوشحال افغانستان نہ صرف خطے بلکہ دنیا کے لیے امن و استحکام کے لیے ضروری ہے۔