مقبول خبریں
مئیر کونسلر جاوید اقبال نےرضاکارانہ خدمات پرتنظیم وائی فائی کو تعریفی سرٹیفکیٹ اور شیلڈ سے نوازا
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
حکومتی کمیٹی نے طالبان سے مذاکرات سے قبل مینڈیٹ بارے وضاحتیں طلب کرلیں
اسلام آباد ... طالبان سے مذاکرات کیلئے بنائی گئی حکومتی مذاکراتی کمیٹی نے طالبان کی نمائندہ کمیٹی سے مذاکرات سے قبل اس کے اختیارات اور مینڈیٹ بارے وضاحتیں طلب کرلیں‘ حکومتی مذاکراتی کمیٹی کے رکن رحیم اللہ یوسفزئی نے طالبان کمیٹی کے رابطہ کار مولانا یوسف شاہ حکومتی کمیٹی کی طرف سے مانگی گئی وضاحتوں سے آگاہ کردیا۔ منگل کو وزیراعظم ہائوس میں حکومتی مذاکراتی ٹیم کا وزیراعظم کی زیر صدارت اجلاس منعقد ہوا جس میں طالبان کی کمیٹی سے چند وضاحتیں طلب کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق کمیٹی کے رکن رحیم اللہ یوسفزئی نے اجلاس کے بعد مولانا یوسف کو آگاہ کیا ہے کہ حکومتی کمیٹی جاننا چاہتی ہے کہ مولانا فضل الرحمن اور عمران خان کی جانب سے انکار کے بعد طالبان ان کی جگہ کس کو اپنی کمیٹی میں نامزد کریں گے۔ کمیٹی یہ بھی جاننا چاہے گی کہ طالبان کی 9 رکنی نگران کمیٹی کا کردار کیا ہوگا‘ یہ کس طرح کام کرے گی‘ طالبان کی نگران اور مذاکراتی کمیٹی کے درمیان کیا روابط بھی ہوں گے اور کیا یہ نگران کمیٹی حکومتی مذاکراتی کمیٹی سے بات چیت بھی کرے گی یا نہیں اور سب سے بڑھ کر حکومتی مذاکراتی ٹیم یہ جاننا چاہے گی کہ طالبان کی مذاکراتی کمیٹی کا مینڈیٹ اور اختیارات کیا ہوں گے۔ ان سب وضاحتوں کا جواب آنے سے قبل طالبان اور حکومتی مذاکراتی کمیٹیوں کے مذاکرات فائد مند نہیں ہوں گے۔ ذرائع کے مطابق مولانا یوسف نے حکومتی کمیٹی کے رکن رحیم اللہ یوسفزئی کو جواب دیا کہ مولانا سمیع الحق اکوڑہ خٹک چلے گئے ہیں۔ حکومتی کمیٹی کے تمام وضاحت طلب امور پر ان سے مشاورت کے بعد کوئی جواب دیا جائے گا۔