مقبول خبریں
راچڈیل کیسلمئیرسنٹر میں کمیونٹی کو صحت مند رہنے،حفاظتی تدابیر بارے آگاہی ورکشاپ کا انعقاد
یورپی پارلیمنٹ میں قائم ’’فرینڈز آف کشمیر گروپ‘‘ کی تنظیم سازی کردی گئی
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
ہم نے سچ کو دیکھا ہے جھوٹ کے جھروکوں سے!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
دنیا بھر کی طرح پاکستان میں بھی 4فروری کو’’ ورلڈ کینسر ڈے‘‘منایا جائیگا
ملتان ۔دنیا بھر کی طرح پاکستان میں بھی 4فروری بروز منگل’’ ورلڈ کینسر ڈے‘‘منایا جائیگا۔کینسر کاشمار دنیا کے موذی ترین امراض میں ہوتا ہے اور دنیا میں اموات کی سب سے بڑی وجہ بھی کینسر ہے۔عالمی ادارہ ہیلتھ کے اعدادو شمار کے مطابق ہرسال دنیا میں 70لاکھ افراد کینسر کے نتیجے میں موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں جو مجموعی اموات کا13فیصد ہے۔ایک تخمینے کے مطابق 2005ء سے 2015ء کے درمیان 8کروڑ40لاکھ افراد کینسر کی وجہ سے موت کا شکارہونگے۔دنیا بھر کی طرح پاکستان میں بھی موت کی بڑ ی وجہ کینسر ہی ہے۔کینسر کی دیگر اقسام کی طرح پاکستانی خواتین کی بڑی تعداد چھاتی کے سرطان میں مبتلاہے۔ایشیاء میں پاکستان وہ ملک ہے جہاں سب سے زیادہ خواتین چھاتی کے کینسر کاشکارہیں۔ہر9میں سے ایک خاتون اس مرض میں مبتلا ہے اورہرسال اس کے نتیجے میں 40ہزار خواتین موت کے منہ چلی جاتی ہیں۔کینسر سوسائٹی ملتان کے جنرل سیکرٹری اور نشترہسپتال ملتان کے شعبہ کینسر کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر اعجاز مسعود نے اے پی پی سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ کینسر کے علاج کیلئے جو بھی تحقیق ہونی تھی وہ مکمل ہوچکی ادویہ تیارہوچکی ہیں ،علاج موجودہے لیکن اب سب سے زیادہ ضرورت یہ ہے کہ کینسر سے بچاؤ کیلئے حفاظتی تدابیر کی جائیں۔انہوں نے کہاکہ کینسر کی بڑی وجوہات میں سے ایک تمباکونوشی ہے۔ہم اپنی سوسائٹی کے زیراہتمام تمباکونوشی کے خلاف مہم جاری رکھے ہوئے ہیں۔ہم مختلف شہروں اوراداروں میں جا کر کینسر سے بچاؤ کیلئے لوگوں کو آگاہ بھی کررہے ہیں خاص طورپر خواتین میں چھاتی کے کینسر کی وجوہات اوراس کی روک تھام کیلئے معلومات فراہم کی جارہی ہیں۔انہوں نے کہاکہ ضرورت اس بات کی ہے کہ لوگوں کو کینسر کی علامات سے آگاہ کیا جائے تاکہ ابتدائی سٹیج پر ہی اس مرض کی تشخیص ہوسکے اوربچاؤ کی کوئی صورت تلاش کی جاسکے۔