مقبول خبریں
راچڈیل کیسلمئیرسنٹر میں کمیونٹی کو صحت مند رہنے،حفاظتی تدابیر بارے آگاہی ورکشاپ کا انعقاد
یورپی پارلیمنٹ میں قائم ’’فرینڈز آف کشمیر گروپ‘‘ کی تنظیم سازی کردی گئی
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
ہم نے سچ کو دیکھا ہے جھوٹ کے جھروکوں سے!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پشاور ، قصہ خوانی بازار کے سینماگھر میں دھماکے ،5افرادجاں بحق ،30سے زائد زخمی
پشاور۔ پشاور کے علاقے قصہ خوانی بازار کے قریب سینما گھر میں دھماکے، 5 افراد جاں بحق،30 سے زائد افراد زخمی ہو گئے ۔ تفصیلات کے مطابق پشاور کے علاقے قصہ خوانی بازار کے قریب سینما گھر میں دھماکوں سے 5 افراد جاں بحق اور30 سے زائد افراد زخمی ہو گئے،سینما گھر میں لوگ فلم دیکھنے بیٹھے ہوئے تھے کہ اچانک زوردار دھماکے ہو گئے۔ دھماکوں سے سینما گھر میں افراتفری پھیل گئی اور زخمیوں نے چیخ و پکار شروع کر دی۔ گھر میں دھماکے کے وقت 100 سے زائد افراد موجود تھے۔ دہشتگردی واقعہ کی اطلاع ملتے ہی قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار، بم ڈسپوزل سکواڈ اور ریسکیو کا عملہ جائے حادثہ پر پہنچ گیا۔ زخمیوں کو ایمبولینسوں کے ذریعے لیڈی ریڈنگ ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں انھیں طبی امداد دی جا رہی ہے۔ دھماکوں کی شدت کے باعث ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔ دھماکوں کی جگہ کو گھیرے میں لے کر تفتیش شروع کر دی گئی ہے۔ایس پی سٹی نے بتایا کہا کہ سینما کے اندر دو گرینیڈ حملے کیے گئے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ جس وقت دستی بم کے حملے کیے گئے اس وقت سینما میں 90 کے قریب افراد موجود تھے۔ایس پی سٹی فیصل مختار نے کہا کہ انٹیلیجنس رپورٹس تھیں کہ شدت پسند سینما گھروں کو نشانہ بنا سکتے ہیں۔ہم نے تمام سینما گھروں کے مالکان کو متنبہ کیا تھا کہ حملے کی رپورٹس ہیں اور وہ سکیورٹی کو مزید سخت کریں۔ایس پی سٹی نے مزید کہا کہ کچھ عرصے قبل سینما گھروں کے چوکیداروں کو تربیت دی گئی تھی کہ چیکنگ کیسے کرنی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ تحقیقات کی جا رہی ہیں کہ حملہ آور کیسے دستی بم سینما کے اندر لانے میں کامیاب ہوا۔پولیس کا کہنا ہے کہ ریسکیو کام شروع ہو گیا ہے اور سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ زخمیوں کو لیڈی ریڈنگ ہسپتال منتقل کیا جا رہا ہے۔پشاور میں اس سے پہلے بھی شدت پسندی کے متعدد واقعات میں عام شہریوں اور سکیورٹی حکام کو نشانہ بنایا جا چکا ہے۔دوسری جانب کالعدم تحریک طالبان نے کہا ہے کہ قصہ خوانی بازار سے طالبان کا کوئی تعلق نہیں۔