مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
اپنے بچوں کے دلوں میں عشقِ مصطفیٰ اور اولیاء اللہ کی محبت بھی پیدا کریں: پیر نقیب الرحمان
برمنگھم ... حضورؐ کے پیغام محبت و آتشی کا ہی ایسا دل نشین اثر تھا کہ ایک دوسرے کے قتل کے درپے افراد محبت و اخوت اور اخلاص و ایثار کے پیکر بن گئے۔ اللہ اور اس کے رسول کریمؐ کے احکامات و تعلیم کو دل و جان سے قبول کرکے پوری دنیا میں امن اور اسلام کے سفیر بن گئے۔ نبی آخر الزماں حضور اکرمؐ کی تعلیمات، اسوہ ٔ حسنہ اور حیات مبارکہ، قیامت تک کائنات کی رہنمائی اور کامیابی کا سب سے اہم اور مضبوط ترین ذریعہ ہے، اس لئے حضورؐ کی ذات گرامی کو رحمت اللمسلمین نہیں بلکہ رحمت اللعالمین کہا گیا ہے، ان خیالات کا اظہار سجادہ نشین عید گاہ شریف پیر سید نقیب الرحمان نے جشن عید میلاد النبی کے سلسلے میں منعقدہ ایک تقریب میں کیا جسکا اہتمام بنگلی ہال میں خدام عید گاہ شریف نے کیا تھا۔ جشن عید میلاد النبی کی تقریب دن 1 بجے شروع ہوئی اور رات 10 بجے تک نظم و ضبط اور ذوق و شوق سے جاری رہی۔ پیر سید دلدار حسین شاہ اور صاحبزادہ لخت حسنین نے خصوصی طور پر اس محفل میں شرکت کی اور پیر سیدنقیب الرحمان کے ہمراہ کیک کاٹا۔ جشن میلاد النبی میں حافظ نور سلطان صدیقی،قاری نجم المصطفیٰ، الحاج یوسف میمن، شہباز قمر فریدی اور دیگر نعت خوانوں اور قرأ نے ہدیہ عقیدت پیش کیا جبکہ علمائے کرام میں علامہ شاہجہان مدنی، علامہ برکات احمد چشتی، حافظ فاروق چشتی، علامہ نیاز احمد صدیقی اور دیگر معروف علماء و مشائخ شامل تھے۔ صاحبزادہ حسیب الرحمان نے بھی محفل میں نذرانہ عقیدت پیش کیا۔آستانہ عالیہ عید گاہ شریف کے سجادہ نشیں پیر محمد نقیب الرحمن نے کہا کہ آج وقت کا تقاضا ہے کہ دنیا کے بدلتے ہوئے حالات اور خاص طور پر اسلام اور مسلمانوں کے بارے میں جاری سازشوں کا مقابلہ کرنے کے لئے ہم دنیا کے سامنے حضور پرنور ہمارے آقا و مولا محمد عربیﷺ کا دیا ہوا خوبصورت اور ابدی پیغام پیش کریں۔ انہوں نے کہا کہ آج ہمارے مسائل اور ناکامیوں کی ایک اہم اور بڑی وجہ یہ بھی ہے کہ ہم اپنے پیارے نبیؐ کے راستے سے ہٹ گئے ہیں۔ ہمیں دنیا میں خود کو صرف اور صرف حضور کا غلام اور امتی بن کر پیش کرنا ہوگا۔ جب ہم خود کو آقا کا سچا اور پکا غلام بنالیں گے تو یہ دنیا ہمیں حقیر اور چھوٹی دکھائی دے گی۔ خاص طور پر مغرب میں ہمیں آج جو بڑے بڑے چیلنج درپیش ہیں ان کا مقابلہ ہم سوائے اتباع رسول اور اللہ کے ولیوں کے راستے پر چلے بغیر کر ہی نہیں سکتے۔ اسلام کے پیغام اور آفاقیت کو لے کر عاشقانِ رسول اور اولیاء اللہ جس طرف بھی گئے وہاں دین اسلام کے جھنڈے لہرائے کامیاب اور سرخرو ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ خاص طور پر یورپ اور مغرب میں بسنے والے مسلمانوں کو چاہئے کہ وہ اپنی اولاد کو جدید ترین علوم اور مقابلے بازی میں کامیاب کرنے کے ساتھ ساتھ اپنے بچوں کے دلوں میں عشقِ مصطفیٰ اور اولیاء اللہ کی محبت بھی پیدا کریں۔ اور اس توازن اور معیار کو برقرار رکھیں جو ہمارے دین نے ہمیں دیا ہے۔