مقبول خبریں
راچڈیل، ساہیوال جیسے شہروں کے رشتے کو مثالی بنایا جائیگا: ممبر پنجاب اسمبلی ندیم کامران
پارٹی رہنما شعیب صدیقی کو پاکستان تحریک انصاف پنجاب کا سیکریٹری جنرل بننے پر مبارک باد
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
ہم نے سچ کو دیکھا ہے جھوٹ کے جھروکوں سے!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
شام سے واپسی پر جہادیوں کو گرفتار ہوکر بحالی پروگرام میں شرکت کرنا ہوگی: سر پیٹر فاہی
مانچسٹر ... چیف کانسٹیبل مانچسٹر پولیس سر پیٹر فاہی کا کہنا ہے کہ عالمی تناظر کے پیش نظر اس امر کا قوی امکان ہے کہ شام میں جہاد کیلئے گئے برطانوی جہادیوں کو واپسی پر گرفتار کر لیا جائے گا۔ ان پر مقدمات قائم کئے جائیں گے اور ان سے انتہا پسندی کے خاتمے کیلئے انکی تربیت کی جائے گی کیونکہ انتہا پسندوں کی جنگ سے واپسی قوم کیلئے خطرے کا باعث ہوگی۔ صرف جنوری کے مہینے ہی میں اب تک شام اور برطانیہ کے درمیان سفر کرنے والے سولہ افراد کو دہشتگردی کے الزامات میں گرفتار کیا گیا ہے، جبکہ گذشتہ پورے سال کے دوران صرف چوبیس ایسے افراد کو گرفتار کیا گیا تھا۔ برطانوی نشریاتی ادارے سے بات چیت کرتے ہوئے انکا کہنا تھا کہ بحالی کے مذکورہ پروگرام کے تحت پولیس سکولوں اور نوجوانوں کی دیگر تنظیموں کے ساتھ مل کر کام کرے گی جس کا اصل مقصد اس بات کو یقینی بنانا ہے کے ایسے افراد شام میں اپنے تجربات سے ذہنی طور پر متاثر نہ ہوئے ہوں اور یہ کہ وہ برطانیہ کے لیے کسی خطرے کا باعث نہ بنیں۔ انکا یہ بھی کہنا تھا کہ اگرچہ پروگرام کا مرکزی مقصد شام جانے والے برطانوی باشندوں کی اپنی فلاح کو یقینی بنانا ہے لیکن ہمیں ایسے افراد کے بارے میں شدید خدشات ہیں جنہیں شدت پسند بنا دیا گیا ہو اور وہ شام میں دہشتگردی کی تربیت حاصل کرتے رہے ہوں۔ انٹیلی جنس افسران کا اندازہ ہے کہ برطانیہ سے شام جانے والے افراد کی تعداد چند سو تک ہو سکتی ہے۔ کنگز کالج لندن کے ایک تحقیقی مرکز کے مطابق برطانوی جہادیوں کی بڑی تعداد کا تعلق ایسے پاکستانی نژاد نوجوانوں سے ہے جو یونیورسٹی کی سطح تک تعلیم یافتہ ہیں۔