مقبول خبریں
راچڈیل مساجد کونسل کی طرف سے مئیر کونسلر محمد زمان کی مئیر چیرٹیز کیلئے فنڈ ریزنگ ڈنر کا اہتمام
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
برطانیہ میں جوان اولاد کا والدین کے ہمراہ رہنے کی شرح میں اضافہ، قومی ادارے کی رپورٹ
لندن ... برطانیہ میں دنیا کے دیگر ترقی یافتہ ممالک کے برعکس جوان بچوں کی اپنے ماں باپ کے ہمراہ رہنے کی شرح میں اضافہ دیکھنے کو آیا ہے۔ برطانوی دارالحکومت لندن میں سب سے کم جوان مرد یعنی 22 فیصد اپنے والدین کے ساتھ رہتے ہیں، جب کہ شمالی آئرلینڈ میں 36 فیصد اور اس کے بعد مڈلینڈز میں 29 فیصد اپنے خاندان کے ساتھ رہتے ہیں۔ یہ اعداد و شمار برطانوی شماریاتی ادارے کی طرف سے جاری کئے گئے ہیں جن کے مطابق ملک کے ایک چوتھائی جوان افراد اپنے والدین کے ساتھ رہائش پذیر ہیں۔ سروے کے مطابق 2013 میں 20 سال سے 34 سال کی عمر کے 33 لاکھ افراد اپنے والدین کے گھروں میں مقیم تھے۔ 1996 کے دستیاب اعداد و شمار کے مطابق اسی عمر کے 27 لاکھ افراد والدین کے ساتھ رہائش پذیر تھے اور یہ شرح اس وقت 21 فیصد بنتی تھی۔ سروے کے مطابق شمالی آئرلینڈ کے رقبے کی وجہ سے برطانیہ کے دیگر علاقوں کی مقابلے میں یہ زیادہ آسان ہے کہ لوگ نوکری یا یونیورسٹی گاڑی پر جائیں اور والدین کے ساتھ رہیں۔2013 میں 20 سال کی عمر کے 65 فیصد مرد اور 52 فیصد خواتین اپنے گھروں میں رہتے تھے۔ 34 سال کی عمر میں اس شرح میں کمی آئی ہے اور آٹھ فیصد مرد اور تین فیصد خواتین اپنے والدین کے ساتھ رہائش پذیر تھے۔ او این ایس کے مطابق حالیہ معاشی بحران والدین کے ساتھ رہنے کے رجحان میں اضافے کا سبب ہو سکتا ہے۔