مقبول خبریں
جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی برطانیہ برانچ کے زیرِ اہتمام فکر مقبول بٹ شہید ورکز یونیٹی کنونشن کا انعقاد
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
اصل آئین وہی ہے جومحمد مصطفی 14 سو سال پہلے پوری انسانیت کیلئے دے گئے: پیر حبیب الرحمان محبوبی
بریڈفورڈ ... اسلام مکمل ضابطہ حیات ہے۔ پاکستان کے آئین میں تبدیلی کی باتیں کرنے والے خود آئین سے واقف نہیں۔ 1973ء کے متفقہ آئین میں اسلامی شریعت کی مکمل تشریح موجود ہے، کوئی بھی مسلمان دین کے بنیادی اصولوں میں تبدیلی کرکے من پسند آئین نہیں بنا سکتا،آئین وہی ہے جومحمد مصطفیﷺ 14 سو سال پہلے دے گئے تھے، جس کی مکمل تشریح قرآن و سنت اور احادیث میں موجود ہے، اس سے ہٹ کر کسی قسم کی بھی تبدیلی قابل مذمت ہے، ان خیالات کا اظہار پیر حبیب الرحمان محبوبی نے جامعہ الصفہ میں میلاد النبی ک حوالے سے منعقدی ایک تقریب میں کیا۔ اس تقریب کی ایک خصوصیت یہ تھی کہ نبی پاک کی بچوں سے محبت کی سنت کو اس طرح ادا کیا گیا کی نعت خواں بچوں میں انعامات تقسیم کئے گئے۔ پیر محمد حبیب الرحمن محبوبی نے صدارتی خطاب میں مزید کہا کہ پاکستان میں تمام مسائل کا حل نظام مصطفیٰ میں ہی ہے۔ اس کے علاوہ کوئی قانون نہیں چل سکتا۔ پاکستان کے آئین میں باتیں کرنے والے قائداعظم محمد علی جناح کی روح سے بے وفائی کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ سوچی سمجھی سازش کے تحت اس قسم کی باتیں کی جارہی ہیں۔ جس سے پاکستان کی سلامتی کو خطرہ لاحق ہوسکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمیں پاکستان کے حالات کے ساتھ برطانیہ جس میں ہم رہ رہے ہیں اس پر بھی کڑی نظر رکھنا ہوگی۔ ہمیں امن کا پیغام دینا ہوگا۔ اسلام کے خلاف پائی جانے والی غلط فہمیوں کو اپنے کردار سے دور کرنا ہوگا۔ اس سے قبل انہوں نے تصوف کے موضوع پر ماہانہ تربیتی کیمپ میں اسلام کے گولڈن چین پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حضرت امام جعفر صادقؒ کے بعد حضرت بایزید بسطامی کا تعلق بڑے اولیا اور مشائخ عظام میں سے ہوتا ہے۔ انہوں نے قرب الٰہی ریاضت و عبادت سے حاصل کیا۔ حافظ فضل احمد قادری نے کہا کہ 73 کا آئین پاکستان کا پہلا متفقہ آئین ہے، یہ کہنا کہ یہ اس آئین پر صرف طالبان ہی عمل کروا سکتے ہیں انتہائی غیر ذمہ دارانہ بیان ہے۔ ہم طالبان برانڈ کے اسلام نہیں چاہتے، پاکستان کے اندر وہی اسلام ہوگا جو پوری انسانیت کا تحفظ کرے گا۔ مولانا فضل احمد قادری نے ایک اہم مسئلے کی طرف کمیونٹی کی توجہ دلاتے ہوئے کہا آج جگہ جگہ حضور پاکﷺ کی نسبت سے موئے مبارک کی زیارتیں کروائی جارہی ہیں اور ہدیئے وصول کئے جارہے ہیں، وہ دراصل گستاخی کے مرتکب ہورہے ہیں۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ موئے مبارک کی سند حاصل کی جائے ایسا کرنا کوئی بے ادبی نہیں، آج سے 1200 سال پہلے بھی اس طرح کی جعلسازیاں ہوتی رہیں ہیں۔ پیر سید شعیب حسین شاہ نے نبی کریمﷺ اور صحابہؒ کی سیرت پر تفصیلی خطاب کیا۔ جشن میلاد مصطفیٰ کی کانفرنس سے مولانا مفتی عبدالرسول، حضرت علامہ پروفیسر صدیق اکبر، حضرت صاحبزادہ پیر غلام محی الدین، صاحبزادہ اسرار الحق اویسی صاحبزادہ انوار الحق قادری، حافظ منیر احمد صابر، بلال احمد جامی، مولانا سجاد رومی، محمد سعید مکی، حافظ ظہیر اقبال، صاحبزادہ دلشاد احمد قادری، قاری محمد اعجاز، مولانا قاسم سعیدی، قاری محمد عتیق سیالوی، مولاا سعید سیالوی، مولانا حافظ محمد حسن ہاشمی، حافظ طارق محمود، حافظ نثار احمد، مولانا محمد کاشف، حافظ محمد عاقب، محمد حبیب الرحمان سیالوی، طلحہ شاہ بخاری، صوفی عبدالمجید، قاری محمد بشیر کے علاوہ صفۃ الاسلام کے رضا گروپ نے خطاب، نعت اور تلاوت کی صورت میں عقیدت کے پھول نچھاور کئے۔