مقبول خبریں
راچڈیل مساجد کونسل کی طرف سے مئیر کونسلر محمد زمان کی مئیر چیرٹیز کیلئے فنڈ ریزنگ ڈنر کا اہتمام
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
برطانوی بینک برکلے کے حالیہ فیصلے پر عملدرآمدسے پاکستان کوبرطانیہ سے ترسیل زر میں کمی کا خدشہ
برمنگھم .. برطانوی برکلے بینک کی جانب سے برطانیہ کی 70 فیصد منی ٹرانسفر فرمز کو سہولتوں کی فراہمی واپس لینے کے حالیہ فیصلے پر عملدرآمدسےتقریباً 2سو پاکستانی منی ٹرانسفر ایجنٹس انتہائی متاثر ہو سکتے ہیں اور خود پاکستان کوبرطانیہ سے ترسیل زر میں کمی کا سامنا ہوسکتا ہے۔ پاکستانی رقم منتقل کرنے والوں کو شکایت ہے کہ بھارت اور بنگلہ دیش کے مالیاتی ادارے برطانیہ میں اپنے منی ٹرانسفر ایجنٹوں کی مدد کیلئے آگئے ہیں مگر پاکستان کی جانب سے مکمل خاموشی ہے اور کسی ایک بینک اور حکومتی ادارے نے برطانیہ میں اپنے صارفین کی مدد، تعاون اور تسلی کیلئے ایک لفظ بھی نہیں کہا۔ برکلے کا دعویٰ ہے کہ وہ اپنی اینٹی منی لانڈرنگ اور انسدادِ دہشت گردی پالیسیوں پر معمول کے جائزے کے لئے ایجنٹوں کے اکاؤنٹس سے دستبردار ہورہا ہے۔ مگر ان فرموں کو یہ نہیں بتایا کہ اس کی ضروریات کیلئے کیا اضافی کنٹرول ہوگا، سمجھا جارہا ہے کہ برطانوی بینک امریکی بینکنگ ریگولیٹرز کی ہدایت پر عمل کر رہا ہے مگر برکلے کا فیصلہ حیران کن ہے۔ کیونکہ برطانیہ سے ترسیل زر کوایف سی اے اور ایچ ایم آر سی ریگولیٹ کرتے ہیں۔ برکلے بینک کے فیصلے پر پاکستان، بھارت اور بنگلہ دیش کی منی ٹرانسفر، فرموں نے احتجاج کیا ہے۔ برطانیہ سے اندازہً 5.74 ارب پونڈ پاکستان، بھارت، بنگلہ دیش، پولینڈ، فلپائن وغیرہ کو بھیجے جاتے ہیں۔ اگر فیصلہ تبدیل نہ ہوا تو صارفین امریکی رجسٹر کمپنیوں مثلاً ویسٹرن یونین وغیرہ سے رقم بھیجنے پر مجبور ہونگے۔