مقبول خبریں
اولڈہم ٹاؤن میں پہلی جنگ عظیم کی صد سالہ تقریب،جم میکمان،مئیر کونسلر جاوید اقبال و دیگر کی شرکت
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
برطانوی بینک برکلے کے حالیہ فیصلے پر عملدرآمدسے پاکستان کوبرطانیہ سے ترسیل زر میں کمی کا خدشہ
برمنگھم .. برطانوی برکلے بینک کی جانب سے برطانیہ کی 70 فیصد منی ٹرانسفر فرمز کو سہولتوں کی فراہمی واپس لینے کے حالیہ فیصلے پر عملدرآمدسےتقریباً 2سو پاکستانی منی ٹرانسفر ایجنٹس انتہائی متاثر ہو سکتے ہیں اور خود پاکستان کوبرطانیہ سے ترسیل زر میں کمی کا سامنا ہوسکتا ہے۔ پاکستانی رقم منتقل کرنے والوں کو شکایت ہے کہ بھارت اور بنگلہ دیش کے مالیاتی ادارے برطانیہ میں اپنے منی ٹرانسفر ایجنٹوں کی مدد کیلئے آگئے ہیں مگر پاکستان کی جانب سے مکمل خاموشی ہے اور کسی ایک بینک اور حکومتی ادارے نے برطانیہ میں اپنے صارفین کی مدد، تعاون اور تسلی کیلئے ایک لفظ بھی نہیں کہا۔ برکلے کا دعویٰ ہے کہ وہ اپنی اینٹی منی لانڈرنگ اور انسدادِ دہشت گردی پالیسیوں پر معمول کے جائزے کے لئے ایجنٹوں کے اکاؤنٹس سے دستبردار ہورہا ہے۔ مگر ان فرموں کو یہ نہیں بتایا کہ اس کی ضروریات کیلئے کیا اضافی کنٹرول ہوگا، سمجھا جارہا ہے کہ برطانوی بینک امریکی بینکنگ ریگولیٹرز کی ہدایت پر عمل کر رہا ہے مگر برکلے کا فیصلہ حیران کن ہے۔ کیونکہ برطانیہ سے ترسیل زر کوایف سی اے اور ایچ ایم آر سی ریگولیٹ کرتے ہیں۔ برکلے بینک کے فیصلے پر پاکستان، بھارت اور بنگلہ دیش کی منی ٹرانسفر، فرموں نے احتجاج کیا ہے۔ برطانیہ سے اندازہً 5.74 ارب پونڈ پاکستان، بھارت، بنگلہ دیش، پولینڈ، فلپائن وغیرہ کو بھیجے جاتے ہیں۔ اگر فیصلہ تبدیل نہ ہوا تو صارفین امریکی رجسٹر کمپنیوں مثلاً ویسٹرن یونین وغیرہ سے رقم بھیجنے پر مجبور ہونگے۔