مقبول خبریں
یوم عاشور کے حوالہ سے نگینہ جامع مسجد اولڈہم میں روح پرور،ایمان افروز محفل کا اہتمام
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
شہید محترمہ کے وژن کو جانچتے ہوئے دشمن نے انہیں ملک و قوم سےچھین لیا: برسی پرخراج عقیدت
برمنگھم ... شہید محترمہ بینظیر بھٹو جیسا لیڈر عالم اسلام میں شائد ہی پیدا ہو، انکا وژن اور عالمی پزیرائی کو ہی جانچتے ہوئے پاکستان کی ملک دشمن قوتوں نے انہیں ملک و قوم سے ہمیشہ کیلئے چھین لیا۔ ان خیالات کا اظہار مقررین نے پیپلز پارٹی برمنگھم کے زیر اہتمام بی بی شہید کی برسی کی تقریب سے خطاب میں کیا۔ تقریب کا اہتمام صدر پی پی پی برمنگھم چوہدری شاہنواز نے کیا، صدارت لارڈ نذیر احمد نے کی اور مہمان خصوصی آزاد کشمیر کے وزیر اوقاف افسر شاہد تھے۔ مقررین میں ویسٹ مڈلینڈ سے لیبر کے یورپین الیکشن میں امیدوار کونسلر عنصر علی خان، لبریشن لیگ کے چوہدری ظفر اقبال ایڈووکیٹ، تصدق آڑوی، معروف کاروباری شخصیت راجہ اظر حسین، پی پی یوکے کوآرڈینیٹر قیوم راجہ، چوہدری مسکین، پی پی برمنگھم کے سیکرٹری چوہدری ارشاد عزیز، محمد بوٹا شیدائی، نائب حسین اور دیگر شامل تھے۔ لارڈ نذیر احمد نے محترمہ کی شخصیت کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ انکے ہمراہ کسی بھی عالمی زخصیت سے ملنا اچھا لگتا تھا کیونکہ وہ بین الاقوامی امور کو سمجھتی تھیں۔ لارڈ نذیر نے کہا ان کے ہمراہ کئے جانے والے سفر آج بھی ذہن پر نقش ہیں۔ انہوں نے کہا بحیثیت سربراہ مملکت میرے لئے تمام منتخب جمہوری نمائندے ایک سے ہیں لیکن ذاتی زندگی کے حوالے سے بی بی بے نظیر واقعی سب سے الگ اور جدا تھیں۔ وزیر آزاد حکومت محمدافسر شاہد ایڈووکیٹ نے کہا کہ ذوالفقار علی بھٹو نے اس سیاست کو جو مخصوص و خاص لوگوں، ایوانوں، محلوں، کوٹھیوں اور جاگیرداروں تک محدود تھی اس کو عام پاکستانی کے گھروں تک لے کر گئے اور عوام کو طاقت کا سرچشمہ عملی صورت میں انہوں ہی نے پہنایا۔ اسی کی بنیاد پربے نظیر بھٹو نے اپنی سیاست کا آغاز کیا۔ انہوں نے اپنے سیاسی ویژن کے مطابق میثاق جمہوریت پر میاں نواز شریف کے ساتھ معاہدہ کیا جس کی وجہ سے آج ملک میں عوامی اور جمہوری حکومت قائم ہوئی اور میثاق جمہوریت سے قبل سیاسی لڑائی کے دوران میں پہلے ایک جماعت کی حکومت کا خاتمہ کیا جاتا تھا اس کے بعد دوسری جماعت کو بھی فارغ کر دیا جاتا تھا۔ اس کا خاتمہ ہوا اور آمروں نے جو ملک کی تباہی کی اس میثاق جمہوریت کے ذریعے ان کا راستہ ہمیشہ کے لئے بند ہوگیا۔ افسر شاہد نے کہا کہ پاکستان میں لوگ ناکامیوں کی بہت بات کرتے ہیں ہم نے آزادی سے لے کر بہت کچھ کامیابیاں حاصل بھی کیں ہیں صرف ناکامیوں کا تاثر دینا غلط ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہماری ذمہ داری ہے کہ قوم کو آگے لے کر جائیں۔ ڈڈیال کا نمائندہ ہونے کے ناطے کوشش کرتا ہوں لوگوں کے اعتماد اور ان کا وہ حق ادا کر رہا ہوں جو انہوں نے مجھے انتخابات میں منتخب کرکے عائد کیا ہے۔ اس لئے میں نے عوام کے پاس جاکر جو وعدے کئے تھے میں اس پر پوری طرح عملدرآمد کرنے کی کوشش کرتاہوں جو میرا خواب ہے اس حد تک میں تبدیلی نہیں لا سکا۔ لیکن اس سفر کا آغاز کر دیا ہے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے دیگر مقررین چوہدری منظور حسین، چوہدری محمد افضل، چوہدری امجد دوالوی، کونسلر عنصر علی خان، چوہدری شاہنواز، عبدالرئوف مغل، چوہدری محمد حنیف اور دیگر نے بے نظیر بھٹو کی پاکستانی قوم کے لئے خدمات پر ان کو زبردست خراج عقیدت پیش کیا ۔ اس موقع پر یورپی پارلیمنٹ کے انتخابات میں لیبر پارٹی کے ویسٹ مڈلینڈ سے امیدوار کونسلر عنصر علی خان کی بھرپور سپورٹ کرنے کا عہد بھی کیا گیا۔