مقبول خبریں
جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی برطانیہ برانچ کے زیرِ اہتمام فکر مقبول بٹ شہید ورکز یونیٹی کنونشن کا انعقاد
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پرویز مشرف کو انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے،انسانی حقوق کے عالمی ادارے نوٹس لیں: وکلا سابق صدر
لندن ... پاکستان کے سابق صدر جنرل(ر) پرویز مشرف سے روا اکھا جانے والا سلوک عالمی قوانین اور اصولوں سے متصادم ہے جس پر دنیا کے ہر اہم فورم پر آواز اٹھائی جائے گی۔ یہ سلوک ان کے حریف موجودہ وزیر اعظم نواز شریف کی سیاسی مخالفت کا ردعمل ہے جسے کسی طور جائز قرار نہیں دیا جا سکتا۔ ان خیالات کا اظہار سابق صدر پاکستان پرویز مشرف کے انتہائی قابل اعتماد ساتھی چوہدری سرفراز انجم کاہلوں، رضا انجم، معروف برطانوی وکلا سٹیو کے کیو سی اورٹوبی کیڈمین نے برطانوی ہائسز آف پارلیمنٹ کے کمیٹی روم میں میڈیا اور پارٹی کے اہم ارکان کے سامنے کیا۔ ان کا کہنا تھا وہ اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق کو ایک یادداشت بھی پیش کر رہے ہیں جس میں کہا گیا ہے کہ پرویز مشرف کے خلاف آرٹیکل 6 کیس میں بے قاعدگیاں موجود ہیں۔ موجودہ حالات میں وزارت عظمی آفس سے اختیارات کا ناجائز فائدہ اٹھایا جارہا ہے۔ چوہدری سرفراز انجم نے الزام عائد کیا کہ نواز شریف کے مشرف کے خلاف ذاتی انتقام کو بین الاقوامی برادری کے روبرو پیش کیا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ حقیقت بھی عالمی سطح پر لائی جائے گی کہ مشرف کے خلاف قانونی کارروائی بین الاقوامی کنونشنز اور قانون کی حکمرانی کی واضح خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی تنظیمیں اور دوست حکومتیں مشرف کے خلاف نواز شریف کی جانب سے ذاتی انتقام کے لئے الزامات پر حرکت میں آئیں گی۔ وکلا کا کہنا تھا کہ برطانوی و امریکی حکومتیں دہشت گردی کے خلاف عالمی جنگ میں پرویز مشرف کی خدمات اور کاشوں کو متعدد بار سراہ چکی ہے، اب ان پر کڑا وقت ہے اور انہیں انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے تو سعودی عرب سمیت تمام پرانے خیر خواہوں کو انکی مدد کرنی چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ پرویز مشرف کا کیس اقوام متحدہ، یورپین یونین، دولت مشترکہ کی تنظیم اور انٹرنیشنل کمیشن آف جیورسٹس سمیت ہر اہم عالمی فورم پر اٹھایا جائے گا۔