مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مسئلہ کشمیر پربرطانوی پارلیمنٹ میں بحث کیلئےتحریک حق خود ارادیت کی دستخطی مہم ڈربی شائر پہنچ گئی
ڈربی ... برطانوی پارلیمنٹ میں بحث کروانے کے لیے کشمیر پٹیشن پر دستخطی مہم نارتھ آف انگلینڈ سے ہوتی ہوئی ڈربی شائر پہنچ گئی۔ جس کی ابتدا ڈربی شائر کی ممبر پارلیمنٹ ہیدرو ہیلر، ڈربی نارتھ کی کنزرویٹو پارلیمانی امیدوار ایمنڈاسلولو، یورپی پارلیمنٹ کے کنزرویٹو امیدواروں اسٹیفن کاسٹر اور برینڈن سمتھ کی موجودگی میں کشمیری رہنمائوں نے کی۔ تحریک کے چیئرمین راجہ نجابت حسین اور ڈربی نارتھ کی کنزرویٹو امیدوار ایمنڈا سلولو کی دعوت پر بلائے گئے۔ اس خصوصی اجلاس میں جہاں کنزرویٹو پارٹی کے ایسٹ مڈ لینڈ کے ایک درجن سے زائد پارٹی عہدیداروں اور کمپین آفیسروں نے شرکت کرکے کشمیریوں کے جذبات اور خیالات سے آگاہی حاصل کی جہاں کشمیری رہنمائوں میں وزیراعظم آزاد کشمیر کے مشیر سردار عبدالرحمن خان، سنی حریت کونسل برطانیہ کے سربراہ علامہ فضل احمد قادری، چوہدری محمد مقصود، برٹش کشمیری ویمن کونسل کی چیئرپرسن رعنا شمع نذیر، کنزرویٹو مسلم فورم ایسٹ مڈ لینڈ کی چیئرپرسن کونسلر حلیمہ خالد، مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما حاجی محمد بشیر، چوہدری مشتاق احمد، راجہ آفتاب، راجہ محمد راسب، راجہ شہزاد نذیر، بابو محمد اقبال، راجہ محمد اشرف، پیپلز پارٹی بریڈ فورڈ کے قائم مقام صدر چوہدری عبدالقیوم، کنزرویٹو پارٹی نوٹنگھم کے رہنما محمد الیاس اور لئیق احمد کے علاوہ برٹن کے محمد جمیل اور سعدیہ جمیل نے شرکت کرکے ایسٹ مڈ لینڈ کے مختلف حلقوں میں کشمیر پٹیشن پر دستخطی مہم چلانے کے لیے لائحہ عمل طے کیا اور ممبر پارلیمنٹ ہیدرو ہیلر اور دیگر امیدواروں سے معاونت کی اپیل کی، تاکہ مسئلہ کشمیر کو سفارتی محاذ پر اجاگر کرنے کے علاوہ پارلیمنٹ میں بحث کے لیے زیادہ سے زیادہ ممبران پارلیمنٹ کی حمایت حاصل کی جاسکے۔ اپنے استقبالیہ خطاب میں تحریک کے چیئرمین راجہ نجابت حسین نے کنزرویٹو پارٹی کے عہدیداروں کو بریف کرتے ہوئے کہاکہ برطانیہ میں بسنے والے ایک ملین سے زائد کشمیری اپنے وطن کی آزادی کے لیے مقبوضہ کشمیر کے مظلوموں کی آواز بن کر اپنے سیاستدانوں سے توقع رکھتے ہیں کہ وہ کشمیریوں کو حق خودارادیت دلوانے میں عالمی برادری کو متحرک کرنے میں ہماری معاونت کریں گے۔ ممبر پارلیمنٹ ہیدرو ہیلر نے کہا کہ بے شک ان کے حلقہ انتخاب میں کشمیریوں کی بہت کم تعداد ہے، مگر ڈربی سٹی کے کشمیریوں کی بھرپور معاونت کرتے ہوئے جہاں اس پر خود دستخط کررہی ہیں بلکہ دیگر ارکان پارلیمنٹ کو ہمنوا بنانے کے لیے تحریک کے رہنمائوں سے تعاون کریں گی۔ ممتاز کشمیری رہنما علامہ حافظ فضل احمد قادری نے اپنے خطاب میں مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی مسلسل پامالیوں، بھارت کی طرف سے دیوار کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہم بھارتی سرزمین پر دعویدار نہیں ہیں، بلکہ صرف ریاست جموں کشمیر کے عوام کی آزادی کی بات کرتے ہیں۔ کنزرویٹو مسلم فورم کی چیئرپرسن کونسلر حلیم خالد نے کہا کہ وہ اپنے حلقے کی MP اور نائب وزیر دفاع کو برکسٹو کے کشمیریوں کی طرف سے پٹیشن دے چکی ہیں اور اپنے دیگر ساتھیوں کے ہمراہ اگلے دو مہینوں میں تحریک کے ساتھ اس مہم کو کامیاب کرنے کے لیے بھرپور جدوجہد کریں گی۔ کشمیری تحریک میں برمنگھم سے متحرک خاتون رہنما رعنا شمع نذیر نے تفصیل سے مقبوضہ کشمیر میں خواتین اور بچوں پر ہونے والے مظالم کا ذکر کرتے ہوئے عالمی برادری سے اپیل کی کہ وہ ملکوں کی باہمی چپقلش کو نظر انداز کرکے انسانی جانوں کے ضیاع کو رکوائے، ہماری جدوجہد میں تعاون کرے۔ اس موقع پر ڈربی نارتھ کی کنزرویٹو پارٹی کی امیدوار ایمنڈا سلولو نے کہا کہ چند ہفتے قبل تک وہ مسئلہ کشمیر سے بالکل آگاہ نہیں تھیں، مگر تحریک کے عہدیداروں نے جس انداز میں لابی کیا اور ہمیں باور کرایا کہ اس ریجن میں بسنے والے کشمیریوں کے لیے مسئلہ کشمیر کا حل کتنا اہم ہے۔ نارتھ ہمپٹن شائر کے علاقے سے متعلقہ یورپی پارلیمنٹ کے کنزرویٹو امیدوار سٹیفن کاسٹز نے اپنے خطاب میں کہا کہ وہ مقبوضہ کشمیر کو ایک سیاح کے طور پر دیکھ چکے ہیں اور انہوں نے وہاں پر چلنے والی تحریک کا بھی قریب سے مشاہدہ کیا ہے اور وہ اپنے علاقے میں ممبران پارلیمنٹ، کشمیری کمیونٹی لیڈروں اور پارٹی عہدیداروں کا اجلاس بلاکر راجہ نجابت حسین اور ان کے ساتھیوں کو مدعو کریں گے تاکہ اس علاقے میں بھی ممبران پارلیمنٹ سے حمایت حاصل کی جاسکے۔