مقبول خبریں
مسرت چوہدری اور اختر چوہدری کا لارڈ مئیر عابد چوہان کے اعزاز میں ظہرانہ
پاکستان پریس کلب یوکے کے سالانہ انتخابات اور تقریب حلف برداری
چیئرمین پی آئی ایچ آرچوہدری عبدالعزیز کوسوک ایوارڈ فار کمیونٹی سروسز سے نواز گیا
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
اسرار احمد راجہ کی کتاب کی تقریب رونمائی ،مئیر آف لوٹن کونسلر طاہر ملک ودیگرافراد کی شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
ہر انسان کو اس کے مذہب کے مطابق تدفین کی اجازت ملنی چاہئے: سعیدہ وارثی و دیگر
Corona virus
پکچرگیلری
Advertisement
ریاستی نظام کی تبدیلی کیلئے بیانات نہیں اقدامات ناگزیر:چوہدری الطاف شاہد
مانچسٹر (محمد فیاض بشیر)پاک سر زمین پارٹی برطانیہ کے صدرچوہدری محمد الطاف شاہد نے کہا ہے کہ پاکستان کو سنجیدہ قیادت اورتعمیری سیاست کی ضرورت ہے۔پاک سرزمین پارٹی کے بانی ومرکزی چیئرمین سیّد مصطفی کمال اس قبیلے کے سرخیل نے جس نے مادروطن میں نظریاتی سیاست کی آبیاری کابیڑااٹھایا ہے ۔اسٹیبلشمنٹ کی نام نہاد نرسری نے ابھی تک ملک وقوم کوایک بھی شجرسایہ دار نہیں دیا ۔ سیّدمصطفی کمال ہرفسطائیت کیخلاف مزاحمت کارکی حیثیت سے ابھرے ہیں ،ان کی کمٹمنٹ ملک وقوم کے ساتھ ہے۔چاروں صوبوں سے لوگ تبدیلی سرکار کی نحوست سے نجات کیلئے سیّدمصطفی کمال کو پکاررہے ہیں۔عمران خان سمیت ان کے ٹیم ممبرزاقتدارپرست ہیں ،تبدیلی کی صورت میں ان کی سیاست دفن ہوجائے گی لہٰذاءانہوں نے چوروں کااحتساب کرنے کی بجائے ان کے ساتھ سمجھوتہ کرتے ہوئے اپنی توپوں کارخ نیب کی طرف موڑدیا۔وہ مقامی ہوٹل میں ایک سیمینار سے خطاب کررہے تھے۔سینئر نائب صدر مرزافیصل محمود،سابق جنرل سیکرٹری غلام نبی عامر ،جوائنٹ سیکرٹری عمران خان نے بھی سیمینار سے خطاب کیا ۔ چوہدری محمد الطاف شاہد نے مزید کہا کہ ریاستی نظام کی تبدیلی کیلئے بیانات نہیں ٹھوس اقدامات ناگزیر ہیں۔تبدیلی سرکار کے ساتھ ملک میں بدحالی اوربیروزگار ی کاسیاہ دورآیا۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی اورپی پی پی کے ہوتے ہوئے شہرقائدؒ کی سیاسی یتیمی ختم نہیں ہوگی۔پاکستان میں دوررس اصلاحات کی اشدضرورت ہے اوراس کیلئے مادروطن کی باگ ڈورسیّد مصطفی کمال کے ہاتھوں میں دیناہوگی۔انہوں نے کہا کہ عمران خان نے 22برسوں میں ڈینگیں مارنے کے سواکچھ نہیں کیا،انہیں دوسروں کی عزت اچھالنا پسند ہے ۔پاکستانیوں نے ایسا غیرسنجیدہ اورغیر منظم وزیراعظم نہیں دیکھا،وہ مسائل سلجھانے کی بجائے مختلف آئینی وسیاسی ایشوز کوالجھانے میں مصروف ہیں۔