مقبول خبریں
ڈیبی ابراھم کیساتھ ناروا سلوک سے بھارت کا نام نہاد جمہوری چہرہ بے نقاب
مہنگائی کی ذمے دار عمران خان حکومت ہے ،شہباز شریف
دعوت اسلامی برمنگھم کے زیر اہتمام خراب موسم کے باوجودجشن عید میلاد النبیؐ کا جلوس
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
اسرار احمد راجہ کی کتاب کی تقریب رونمائی ،مئیر آف لوٹن کونسلر طاہر ملک ودیگرافراد کی شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
راجہ نجابت حسین کی ڈیبی ابراھام کے ہندوستان میں داخلے پر پابندی کی شدید مذمت
آتش فشاں
پکچرگیلری
Advertisement
ہم پر رسول ؐکے بعد رب العالمین نے جو احسان کیا وہ صحابہ کرام ہیں
اولڈہم (محمد فیاض بشیر)نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے صحابہ کرام کی عادت مبارکہ تھی کہ جب انہیں یہ پتہ چلتا تھا کہ کسی صحابی کے پاس حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی احادیث مبارکہ موجود ہے تو وہ ایک ماہ کی مسافت بھی طے کر کے اسے حاصل کرنے کی کوشش کرتے تھے ۔ ان تاریخی حقائق کو امت مسلمہ تک پہنچانے کے لیے اداراہ نور السلام فیصل آباد کے بانی پیر ابو احمد محمد مقصود مدنی نے اپنے ایک بیان میں میڈیا تک پہنچایا۔ ان کا مذید کہنا تھا کہ ہم پر اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے بعد جو رب العالمین نے احسان کیا ہے وہ صحابہ کرام ہیں آج جو اسلام کا نور ہم تک صحابہ کرام کی وجہ سے حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی احادیث مبارکہ سے پہنچا۔ صحابی حضرت عبداللہ بن عنیس نے شام میں سکونت اختیار کر لی جب جابر بن عبداللہ کو پتہ چلا کہ عبد اللہ بن عنیس کے پاس حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی احادیث مبارکہ ہے تو انہوں نے مدینہ سے شام کا سفر ایک ماہ میں طے کرتے ہوئے ان تک پہنچے اور حضرت عبداللہ بن عنیس کے ہاں پہنچ کر انکے خادم کو بتایا جاؤ کہو کہ میں آیا ہوں وہ بڑھاپے کی حالت میں ہی خوشی سے باہر آئے اور جابر بن عبداللہ سے بغلگیر ہوئے تو میں نے ان سے پوچھا کہ سنا تھا آپکے پاس حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی احادیث مبارکہ ہے سوچا بڑھاپے میں آپ کہاں میرے پاس آئیں گے سو آپکے پاس چلا آیا حضرت عبداللہ بن عنیس نے فرمایا ہاں میرے آقا نے اس آیات بارے فرمایا تھا کہ کل قیامت کا روز ہو گا ایک آواز آئے گی میں سب کا بادشاہ ہوں میں ہی سب کا حساب لینے والا ہوں کوئ جہنی میں اس وقت تک جہنم میں داخل نہیں ہوگا جب تک وہ کسی جہنتی کا حق نہ ادا کر دے اور کوئ جہنتی بھی اس وقت جنت میں داخل نہیں ہو گا جب تک اگر کسی جہنمی کا حق اس نے ادا کرنا ہے وہ نہ کر دے۔جب یہ بات ہوئ تو صحابہ کرام نے حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے وضاحت پوچھی تو انہوں نے کہا اسکی نیکیاں دوسرے کو دی جائیں گی یہ اسکا بدل ہو گا۔ پیر ابو احمد محمد مقصود مدنی نے کہا کہ ہمارے لیے لمحہ فکریہ ہے آجکے دور میں اگر کوئ کسی کا مال ہڑپ کرتا ہے تو اسے اسکا احساس نہیں ہوتا اسے خوف خدا اور اپنے پیارے نبی حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی محبت ہونی چاہیے اور نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے فرمان کو یاد کرنا چاہیے کہ کل قیامت کے دن واحدہ لا شریک کا فرمان آئے گا تو میں کیا جواب دوں گا۔ان کا کہنا تھا کہ ہمیں آخرت کی تیاری کرنی چاہیے اچھے کام کرو دوسروں کے ساتھ حسن اخلاق سے پیش آؤ دوست احباب کو نماز پڑھنے، روزے رکھنے قرآن کریم پڑھنے کی تلقین کرو اور آپس میں محبت بھائی چارے سے رہنے کا درس دو۔