مقبول خبریں
مسرت چوہدری اور اختر چوہدری کا لارڈ مئیر عابد چوہان کے اعزاز میں ظہرانہ
پاکستان پریس کلب یوکے کے سالانہ انتخابات اور تقریب حلف برداری
چیئرمین پی آئی ایچ آرچوہدری عبدالعزیز کوسوک ایوارڈ فار کمیونٹی سروسز سے نواز گیا
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
اسرار احمد راجہ کی کتاب کی تقریب رونمائی ،مئیر آف لوٹن کونسلر طاہر ملک ودیگرافراد کی شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
ہر انسان کو اس کے مذہب کے مطابق تدفین کی اجازت ملنی چاہئے: سعیدہ وارثی و دیگر
Corona virus
پکچرگیلری
Advertisement
پاکستان اور بھارت میں واقعی برابری کہاں ؟ ایک طرف محبت دوسری طرف نفرت
لندن( عمران راجہ) پاک بھارت دوستی کے دلی خواہاں لوگ عام طور پر مایوسی کا اظہار کرتے ہیں کہ دونوں ممالک برابری کی سطح پر نہیں چلتے جسکی وجہ سے حالات کی بہتری ممکن نہیں ہوتی لیکن تاریئخ گواہ ہے کہ بھارت نے ہمیشہ ایسی راہ اختیار کی جس سے نفرے اور علیحدگی واضع ہوتی رہی ہے۔ اسکا عملی مظاہرہ برصغیر پاک و ہند کے کروڑوں لوگوں نے نو نومبر دو ہزار انیس کو دیکھ لیا جب ایک طرف پاکستانی کرتار پورہ راہداری کھولے اپنے بھارتی سکھ دوستوں کو خوش آمدید کہہ رہے تھے تو دوسری طرف بھارتی عدالت عظمیٰ بابری مسجد کی جگہ رام مندر کی تعمیر کا حکم نامہ جاری کررہی تھی۔ جہاں پاکستان دوسرے مذہب کا احترام کرتے ہوئے کرتاپور راہداری کھول رہا تھا وہیں دنیا نے ایک بار پھر انتہا پسند بھارت کا اصلی بدصورت چہرہ دیکھا۔ اس حوالے سے سیاسی حکومت کا تو فوری بیان سامنے نہ آیا کیونکہ وہ کرتار پور راہداری کی افتتاحی تقریب کی خوشیوں میں مگن تھی تاہم سوشل میڈیا پر بپھرے پاکستانی عوام کی تسلی کیلئے ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور کا فوری ردِ عمل سامنے آیا۔ ان کا سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پرٹویٹ کرتے ہوئے کہنا تھا کہ یہ پاکستان کے لئے PR تباہی نہیں بلکہ ہندوتوا سےانسانیت کی تباہی کی عکاسی ہے۔ اچھا ہے آپ کی عدالت نے بابری مسجد فیصلہ کے لیے اسی تاریخ کا انتخاب کیا جب پاکستان دوسرے مذہب کے احترام میں قدم اٹھا رہا تھا اسی وقت انڈیا کا اصلی چہرہ بے نقاب ہو گیا اور دنیا نے انڈیا کی بدصورتی دیکھے بخوبی دیکھ لی۔