مقبول خبریں
مسرت چوہدری اور اختر چوہدری کا لارڈ مئیر عابد چوہان کے اعزاز میں ظہرانہ
پاکستان پریس کلب یوکے کے سالانہ انتخابات اور تقریب حلف برداری
چیئرمین پی آئی ایچ آرچوہدری عبدالعزیز کوسوک ایوارڈ فار کمیونٹی سروسز سے نواز گیا
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
اسرار احمد راجہ کی کتاب کی تقریب رونمائی ،مئیر آف لوٹن کونسلر طاہر ملک ودیگرافراد کی شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
ہر انسان کو اس کے مذہب کے مطابق تدفین کی اجازت ملنی چاہئے: سعیدہ وارثی و دیگر
Corona virus
پکچرگیلری
Advertisement
وہ وقت دورنہیں جب ریاست میں مسلم کانفرنس ایک بار پھر اُبھر کر سامنے آئیگی :چوہدری بشیر رٹوی
مانچسٹر(محمد فیاض بشیر)آل جموں و کشمیر مسلم کانفرنس ”تحریک کشمیر بورڈ“ برطانیہ و یورپ کے چیئرمین‘چوہدری بشیر رٹوی نے کہا ہے کہ مسلم کانفرنس کی پہلی اور آخری ترجیح مسئلہ کشمیر ہے۔مسلم کانفرنس ریاست جموں کشمیر کی نمائندہ جماعت ہے۔مسلم کانفرنس آج بھی اپنی آب و تاب کے ساتھ موجود ہے بہت جلد بھرپور قوت بن کر ابھریں گئے۔سردار عتیق احمد خان کی موجود وقت مقبوضہ کشمیر کے متاثرین کے ساتھ کھڑا ہونا اس بات کی غمازی کرتا ہے کہ مسلم کانفرنس کی پہلی اور آخری ترجیح مسئلہ کشمیر ہے۔مسلم کانفرنس واحد سیاسی جماعت ہے جو کشمیریوں کی سواد اعظم جماعت ہونے کے ساتھ ساتھ تحریک آزادی کشمیر اور تحریک تکمیل پاکستان داعی جماعت ہے۔مسلم کانفرنس مشکل حالات سے نکل چکی ہے،وہ وقت دور نہیں کہ جب ریاست بھر میں مسلم کانفرنس ایک بار پھر اُبھر کر سامنے آئے گی۔اُنھوں نے کہا کہ مسلم کانفرنس نے ہمیشہ بلا تخصیص علاقائی تعصب خطے میں بسنے والے ہر فرد کی نظریاتی بنیادوں پر وابستگی کو اولیت دی ہے،آج بھی مجاہد اول سردار محمد عبدالقیوم خان کے افکار کو دیکھ کر چل رہے ہیں،ریاستی جماعت کشمیری قوم کی بھر پور نمائندگی کر رہی ہے۔ہر دور میں مسلم کانفرنس کو کمزور کرنے کی سازش ہو رہی تھی مگر ہر دور میں یہ جماعت عوامی طاقت سے اُبھر کر سامنے آئی۔ ہندوستان کشمیر میں تسلسل کے ساتھ مسلمانوں کا قتل عام کر رہا ہے،کوئی روکنے والا نہیں،مقبوضہ کشمیر میں قتل و غارت پر خاموش نہیں رہ سکتے۔اُنھوں نے کہا کہ عالمی برادری اور انسانی حقوق کے ادارے مقبوضہ کشمیر کی تازہ ترین صورتحال پر غور کریں،تنازعہ کشمیر کو کشمیری عوام کے جائز اور بین الاقوامی پر تسلیم شدہ خق خودارادیت سے مسلسل بھارتی انکار کا نتیجہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس تنازعہ کو عدل و انصاف،بین الاقوامی قوانین اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق حل کئے بغیر جنوبی ایشاء میں امن و سلامتی کو یقینی نہیں بنایا جا سکتا۔اُنھوں نے اقوام متحدہ،برطانیہ،امریکہ،فرانس،روس اور چین سے مطالبہ کیا ہے کہ جنوبی ایشاء خطے میں امن کو یقینی بنانے کیلئے سیاسی،سفارتی کوششوں سے تنازعہ کشمیر کو حل کروائے۔ہندوستان تمام تر مظالم اور جبر ستم کے باوجود جموں کشمیر کے حریت پسند عوام اپنی تحریک آزادی کو کامیابی تک جاری و ساری رکھنے کیلئے پر عزم ہیں اور دنیا کی کوئی طاقت انہیں اس جائز اور منصفانہ جدوجہد نہیں روک سکتی۔