مقبول خبریں
چوہدری مطلوب کی رہائشگاہ پر جشن عیدمیلادالنبیؐ کی محفل ،نوجوانوں کی بڑی تعداد میں شرکت
پاکستان اور بھارت کے درمیان سب سے بڑا مسئلہ کشمیر کا حل ہے: چوہدری فواد حسین
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
نواز علی کی رہائش گاہ پرحضرت غوث اعظم شیخ عبد القادر جیلانیؒ کے سالانہ عرس پرمحفل کا انعقاد
مرغی آنڈے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
کھانے کے بل پر جان لیوا جھگڑا، پوسٹ مارٹم رپورٹ کچھ نہ واضع کرسکی،عوام سےمدد کی اپیل
مانچسٹر ... برطانیہ کے معروف کری ریسٹورنٹ اکبرز کی لیور پول روڈ مانچسٹر برانچ کے مینجر کی دوران ڈیوٹی ہلاکت کا معمہ حل نہ ہوسکا۔ پولیس کو ملنے والی پوسٹ مارٹم رپورٹ کسی یقینی امر کی تائید نہیں کر رہی۔ واضع رہے45 سالہ مرحوم محمد آصف کی جمعہ کی شب چند نوجوانوں سے بل کے معاملے پر جھڑپ ہوگئی تھی جس کے بعد اسکی طبیعت بگڑ گئی لیکن فوری طور پر ہسپتال پہنچانے کے باجود بھی وہ جانبر نہ ہوسکا اور دم توڑ گیا۔ عینئ شاہدین کا کہنا ہے کہ ایک گاہک نے دھکا دیا جس سے وہ زمین پر گرگیا اور ہارٹ اٹیک کی وجہ سے موقع پر ہی دم توڑ گیا، جبکہ یہ بات بھی مقمی لوگون کی زبان پر ہے کہ کچھ افراد نے مفت کھانے کیلئے ڈھونگ رچایا کہ کھانے سے بال نکل آیا تھا اسلئے ہم پیسے نہ دیں گے جس پر مرحوم کی ان سے توتکار ہوئی کہ اگر بال نکلا تو آپ لوگوں نے اسوقت کیوں نہ بتایا۔ یہ امر بھی قابل ذکر ہے کی ویک اینڈ پر ریسٹورنٹس میں خاصا رش بھی ہوتا ہے اور مینیجر لیول کا شخص سخت ڈپریشن کا شکار ہوتا، اس پر یہ امکان بھی رد نہیں کیا جا سکتا کہ کام کے دوران ہی گھر کی سوچیں بھی بعض لوگ ساتھ ساتھ ہی پال رہے ہوتے ہیں جو ملکر کسی بھی جان لیوا حادثے کا باعث بن جاتی ہیں۔ پولیس نے چند افراد کو حراست میں لیا جن سے ایک 37سالہ شخص کو اپنے ساتھ لے گئے اور تفتیش کر دی ہے۔ مرحوم کی آخری رسومات بریڈفورڈ میں ادا کی جایئں گی۔اکبرز کو عارضی طورپر قبضہ میں لے کر پولیس نے بند کردیا ہے۔ پولیس نے موقع واردات پر موجود افراد اور ریسٹورنٹ سٹاف سے مدد کی اپیل ہے تاہم لوگ آپس میں تو بہت چہ میگویئاں کر رہے ہیں لیکن آگے بڑھ کر اصل صورتحال سے کوئی آگاہی نہیں دے رہا حالانکہ کہ یہ سارا واقعہ سیکنڈز کا نہیں بلکہ کئی منٹوں پر محیط ہے۔