مقبول خبریں
مدر فائونڈیشن گوجرخان کے روح رواں راجہ عرفان کی برطانیہ آمد پر انکے اعزاز میں استقبالیہ
ماحولیاتی آلودگی کے باعث بچہ ماں کے رحم میں مر جاتا ہے یا اسکی افزائش رک جاتی ہے: ایک تحقیق
پاک سر زمین پارٹی کے مرکزی جوائنٹ سیکرٹری محمد رضا کی زیر صدارت عہدیداران و کارکنان کا اجلاس
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
حلقہ ِ ارباب ِ ذوق کے ادبی پروگرام میں پاکستانیوں اور کشمیری کونسلرز کی بڑی تعداد میں شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
پروفیٹک گفٹس ویڈنگ اینڈ ایونٹس آرگنائزر کے زیر اہتمام ایشین ویڈنگ اینڈ پلانرز ایونٹ کا انعقاد
میرے تمام خواب نظاروں سے جل گئے
پکچرگیلری
Advertisement
وزیراعظم عمران خان نے مظلوم کشمیریوں کے سفیر ہونیکا عملی ثبوت دیا:پیر ابو احمد مقصود مدنی
مانچسٹر (محمد فیاض بشیر)وزیراعظم پاکستان عمران خان نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں دین اسلام ، ناموس رسالت اور مودی سرکار کی مقبوضہ کشمیر کے مسلمانوں کو مسلمان ہونے کی وجہ سے تشدد کا نشانہ بنانے دہشت گردی اور انتہا پسندی بارے حقائق سے پردہ چاک کر کے امت مسلمہ کا حقیقی راہنما اور مظلوم کشمیریوں کے سفیر ہونے کا عملی ثبوت دیا۔ ان فرط جذبات کا اظہار ادارہ نور السلام فیصل آباد پاکستان کے بانی پیر ابو احمد محمد مقصود مدنی نے میڈیا کو جاری کیے گئے اپنے ایک بیان میں کیا۔ ان کا مذید کہنا تھا کہ اسلام کے ٹھیکیداروں کو اب کسی کو سرٹیفیکیٹ جاری کرنے کی ضرورت نہیں کہ عمران خان سچا مسلمان ہے کہ نہیں کیونکہ انہوں نے حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ذات بارے توہین آمیز خاکے بنانے اور لکھنے پر جنرل اسمبلی میں کہا کہ اس سے ہمارے دل دکھتے ہیں اور جب عالم اقوام کی طاقتور قوتیں اس بارے سرد مہری کا شکار ہوتی ہیں تو پھر لازماً مسلمانوں کا رد عمل ہو گا۔ ان کا کہنا تھا کہ اب وقت آگیا ہے کہ امت مسلمہ اپنے اندر اتحاد پیدا کرے اور اس بارے جانے کہ کونسی قوتیں انہیں آپس میں لڑانے کے درپے ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے جس طریقے سے مودی سرکار کا مکروہ چہرہ دنیا کے سامنے پیش کیا ہے اس سے کشمیری قوم کی حقیقی ترجمانی کی ہے اب عالمی طاقتوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں بند کروائے اور مودی سرکار پر دباؤ ڈالے کہ وہ کرفیو کا خاتمہ کر کے کشمیری عوام کو بنیادی سہولیات سے مستفید ہونے دے اور اس کے بعد کشمیری قوم کو اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عمل درآمد کرتے ہوئے انہیں ان کا پیدائشی حق خود ارادیت دے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستانی قوم اور امت مسلمہ کو عمران خان کی قدر کرنی چاہیے جو اسلام کا داعی اور پاکستان کا دلی درد رکھنے والا شخص ہے۔