مقبول خبریں
مدر فائونڈیشن گوجرخان کے روح رواں راجہ عرفان کی برطانیہ آمد پر انکے اعزاز میں استقبالیہ
ماحولیاتی آلودگی کے باعث بچہ ماں کے رحم میں مر جاتا ہے یا اسکی افزائش رک جاتی ہے: ایک تحقیق
پاک سر زمین پارٹی کے مرکزی جوائنٹ سیکرٹری محمد رضا کی زیر صدارت عہدیداران و کارکنان کا اجلاس
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
حلقہ ِ ارباب ِ ذوق کے ادبی پروگرام میں پاکستانیوں اور کشمیری کونسلرز کی بڑی تعداد میں شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
پروفیٹک گفٹس ویڈنگ اینڈ ایونٹس آرگنائزر کے زیر اہتمام ایشین ویڈنگ اینڈ پلانرز ایونٹ کا انعقاد
میرے تمام خواب نظاروں سے جل گئے
پکچرگیلری
Advertisement
کشمیر میں مظالم کیخلاف اقدامات نہ اٹھائے تو تباہی کی ذمہ داری بین الاقوامی کمیونٹی پر ہو گی:نعیم الحق
مانچسٹر (محمد فیاض بشیر)وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی نعیم الحق جو جنرل اسمبلی اجلاس میں شرکت کرنے اور عمران خان کی امریکہ سرگرمیوں کو حتمی شکل دینے امریکہ جا رہے ہیں برطانیہ میں پاکستانی و کشمیری کمیونٹی سے ملاقات کے لیے برطانیہ پہنچے۔وزیر اعظم عمران خان کے مشیر کاروباری شخصیت انیل مسرت نے مانچسٹر کے مقامی ہال میں ایک عشائیہ دیا۔ اس موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے نعیم الحق کا کہنا تھا کہ اگر بین الاقوامی کمیونٹی اور اقوام متحدہ نے کشمیر کی کشیدہ صورتحال بارے اقدامات نہ اٹھائے تو پھر تباہی کی ذمہ داری بین الاقوامی کمیونٹی پر ہو گی۔ ان کا مذید کہنا تھا کہ ہم نے تہیہ کر لیا ہے کہ کشمیر کا مسئلہ اب حل کر کے ہی رہیں گے۔ اقوام متحدہ نے قرار داد منظور کی تھی کہ کشمیری قوم کو حق خود ارادیت دیا جائے گا لیکن ہندوستان کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے کشمیری عوام آج تک آزادی سے محروم ہیں جسکی جدوجہد اب بڑھ چکی ہے کم نہیں ہو گی۔۔ہم نے ہندوستان کی وحشیانہ حرکات کی کئی دفعہ مذمت کی ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ مودی حکومت نے مقبوضہ کشمیر کی تمام سیاسی قیادت کو جیل میں بند کر دیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ لاکھوں کشمیری و پاکستانی لائن آف کنٹرول توڑنے کے لیے تیار ہیں اور یہ حقیقت ہے ہماری حکومت کی واضح حکمت عملی ہے کہ ہم اقوام متحدہ اور دیگر اہم ممالک سے رابط کر کے کشمیر کے لیے انکی حمایت لیں اور باور کروائیں کے مسئلہ کشمیر پوری دنیا کے لیے خطرہ بن سکتا ہےان کا کہنا تھا کہ اگر ہندوستان کی حکومت کو اس کا احساس نہیں ہے تو جلد انہیں اسکا خمیازہ بھگتنا پڑے گا۔سعودی عرب کر کردار بارے ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کی محمد بن سلیمان سے مسلسل بات چیت ہوتی رہتی ہے عمران خان ملاقات کے دوران محمد بن سلیمان سے کہیں گے کہ وہ کشمیر کے مسئلہ کی شدت کو سمجھتے ہوئے مودی پر دباؤ ڈالیں تاکہ وہ ہم سے بات چیت کریں وہ تو اس کے لیے بھی راضی نہیں۔ ان کا مذید کہنا تھا کہ جب وزیراعظم عمران خان نے صدر ٹرمپ کو فون کر کے بتایا کہ مودی تو بات چیت ہی نہیں کرنا چاہتا تو صدر ٹرمپ کے الفاظ تھے کہ آپ جیسے عظیم لیڈر سے کیوں کو ئی بات چیت نہیں کرنا چا ہے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ پتہ نہیں کہ مودی کی عقل میں یہ بات نہیں آرہی کہ۔بات چیت کر نے سے بھارت کشمیر اور خطہ کے امن کے لیے فائدہ مند ثابت ہو گی۔پنجاب کے مشیر شہباز گل بارے ان کا کہنا تھا کہ انہیں وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے کہنے پر ہٹھایا گیا انہیں وفاق میں کوئی ذمہ داری دی جائے گی۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی دفعہ رفاعہ عامہ کے کاموں کے لیے خطیر رقم بجٹ میں مختص کی گئی۔ غریب نادار لوگوں کی سہولت کے لیے صحت کارڈ کا اجراء کیا گیا ہے پچاس لاکھ گھروں کی تعمیر پر کام جاری ہے پاکستان کی عوام اب ٹیکس کی ادائیگی آن لائن کر سکے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کی راہنمائی میں سب مسائل سے نکل کر پاکستان ترقی یافتہ ممالک کی صف میں شامل ہو گآ۔وزیر اعظم عمران خان کے معاون خصوصی اوورسیز اینوسٹمنٹ بورڈ صاحبزادہ عامر جہانگیر کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کی طرح پم سب کو کشمیر کا سفیر بننا ہو گا۔ ان کا مذید کہنا تھا کہ کشمیری راہنماؤں کو بھوک ہڑتال کا اعلان کریں ہم۔ساتھ ہوں گے کشمیر کے مسئلہ کو تیزی سے اجاگر کریں اب اسے بے جان نہیں ہونے دینا۔ ان کا کہنا تھا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی دھجیاں اڑا رہا ہے اور مغربی ممالک خاموش ہیں ان کا کہنا تھا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں کرفیو ختم کرے اور کشمیریوں کو آزادی دے۔ بیرسٹر عامر کو کہنا تھا کہ پاکستان بھارت دو ایٹمی طاقتیں ہیں اور ان کی لڑائی سے مسائل بڑھ سکتے ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان دنیا کو پیغام دنیا چاہتا ہے کہ وہ امن کے داعی ہیں جنگ نہیں چاہتے۔ عشائیہ کے میزبان انیل مسرت نے نعیم الحق کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے مصروف ترین شیڈول سے وقت نکالا اور انکی دعوت پر مانچسٹر کی کمیونٹی سے ملے اور انہیں نئے پاکستان اور مسئلہ کشمیر پر پاکستان کی حکومت کے موقف اور تازہ ترین صورتحال بارے آگاہی دی۔ عشائیہ میں سرکردہ کمیونٹی شخصیات کے علاوہ خواتین کی بڑی تعداد نے بھی شرکت کی۔