مقبول خبریں
بین الاقوامی میڈیا نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جارحیت کی کلی کھول دی ہے:سردار مسعود خان
ڈیبی ابراھم کی قیادت میں ممبران پارلیمنٹ اور کمیونٹی رہنماؤں کی لارڈ طارق احمد سے ملاقات
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز اورسیمینارز منعقد کریگی : راجہ نجابت
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کی وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر اور شاہ غلام قادر سے ملاقات
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
9ستمبر کو اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے باہر بھرپور مظاہرہ کرینگے:راجہ نجابت حسین
سوچنے کے موسم میں سوچنا ضروری ہے!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
نگینہ جامع مسجد اولڈہم میں شہدائے کربلا کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے روحانی محفل کا انعقاد
اولڈہم (محمد فیاض بشیر)حضرت امام حسین علیہ السلام نے اپنے خاندان اور ساتھیوں سمیت کربلا کے مقام پر یزیدی قوتوں کے آگے جھکنے کی بجائے نانا حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے دین اسلام کو تاقیامت زندہ رکھنے کے لیے جانوں کے نذرانے پیش کیے ۔ نگینہ جامع مسجد اولڈہم میں کربلا کے شہدا کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے خصوصی روحانی محفل کا انعقاد ہوا۔ محفل میں خصوصی طور پر شرکت کرتے ہوئے علامہ مولانا قمر الزماں اعظمی کا کہنا تھا کہ عاشورہ کی شام امام حسین علیہ السلام کی عظیم قربانیوں کو یاد کرنے کے لمحات ہیں میں امام حسین علیہ السلام کی عظیم قربانیوں کو سامنے رکھ کر کہتا ہوں کہ انہوں نے حق و صداقت کے لیے جان دی اور حق و صداقت کے لیے جان دینا مسلمان کا شیوہ ہے اس شیوے کو اختیار کیجئے تاکہ امام حسین علیہ السلام کی بارگاہ میں بہترین خراج احترام پیش کیا جا سکے۔ مولانا محمد فاروق نورانی کا کہنا تھا کہ شہدائے اور غازیان کربلا ہمیں درس دیتے ہیں کہ تکالیف اور مصیبتوں میں صبر کا دامن ہاتھ سے نہ چھوڑیں اور جب آپ صبر کے ساتھ رہیں گے تو رب العالمین آپ کو بھی وہی مقام عطا فرمائے گا اور اگر اسلام کی خاطر جان کا نذرانہ پیش کرنے پڑے تو کر دو اللہ تعالیٰ جان کے نذرانے کے بدلے آپکو بھی یہی مقام عطا فرمائے گا۔ان کا کہنا تھا کہ بارگاہ خداوندی میں دعا کہ شہدائے کربلا کے صدقے کشمیر کو آزادی عطا فرمائے اور عالم اسلام پر اپنی رحمتوں کا نزول فرمائے۔ مولانا حافظ محمد بشیر چشتی کا کہنا تھا کہ جو امام علی مقام کی شہادت کو یاد رکھیں گے وہ اسلام کا دامن مضبوطی سے تھام کر رکھیں گے ان کا مذید کہنا تھا کہ امام علی مقام کے توسط سے آنے والے وقت میں جب بھی اسلام پر مشکل وقت آنے گا کوئ نہ کوئ غیور مسلمان بیدار رہے گا اور وہ اسلام کو زندہ کرنے کے لیے تن من کی قربانی پیش کرے گا رب العالمین کی بارگاہ اقدس میں دعا کرتے ہوئے کہا کہ حضرت امام علی مقام، آل نبی،حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے توسط سے دعا کرتے ہیں زندہ رہیں تو اہل اطہار کی محبت میں اور جب دنیا سے جائیں ہمارا خاتمہ انکے صدقے میں فرما۔ حاجی محمد فرخ صدیق کا کہنا تھا کہ دسویں محرم کے حوالہ سے تقریب کا انعقاد ہوا کائنات کا افضل ترین خون سستا ہو کر کربلا کی مٹی میں مل گیا وہ بے مقصد نہیں تھا اسکا مقصد تھا ۔ان کا مذید کہنا تھا کہ آج بھی کشمیر اور فلسطین میں یزیدی قوتیں زندہ ہیں اور مسلمانوں پر ظلم ہو رہا ہے انشاء اللہ یہ رائیگاں نہیں جائے گا اور اسکا ہمیں پھل ملے گا اور کشمیر آزاد ہو گا۔ روحانی محفل کی نظامت نگینہ جامع مسجد کے پیش رو امام مولانا قاری خادم حسین چشتی نے کی۔ تلاوت قرآن پاک کا شرف صاحبزادہ بلال کو ہوا جبکہ صاحبزادہ وقاص احمد چشتی، مولانا محمد فاروق نورانی نے ہدیہ نعت اور منقبت پیش کی۔ مولانا حافظ محمد بشیر چشتی نے امت مسلمہ اور بالخصوص مقبوضہ کشمیر کے مظلوم مسلمانوں کی آزادی کے لیے خصوصی دعا بھی کی۔ حاضرین محفل میں لنگر تقسیم کیا گیا۔