مقبول خبریں
عبدالباسط ملک کے والدحاجی محمد بشیر مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کیلئے دعائیہ تقریب
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
ہائی کمیشن اور میڈیا کے تعاون سے ممبران چیمبرکو تاریخ ساز سہولیات دیں گے،صدر اے شاہین
لندن ... اس سال یوکے پاکستان چیمبر آف کامرس کی کوشش رہے گی کہ سال کے مختلف دنوں میں کلچرل اور کمیونٹی کے پروگراموں کا انعقاد کیا جائے ۔ اور پاکستان و برطانیہ کے درمیان تجارت کو فروغ دینے کے حوالے سے لابنگ کی جائے گی۔ ان خیالات کا اظہار چیمبر کے صدر عبدالمجید شاہین نے اپنے سالانہ پروگرام کی آگاہی کیلئے منعقدہ تقریب میں ممبران اور صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاسال 2013-14 ء کے لائحہ عمل کو کامیاب بنانے کے لئے یوکے پی سی سی آئی میں مختلف شعبہ جات میں کام کرنے کیلئے باقاعدہ کمیٹیاں بنا دی گئی ہیں ۔ جو ممبر سازی ‘ پروگراموں کے انعقاد ، ویب سائٹس ، سپانسر ز اور پریس اینڈ میڈیا کے معاملات کی دیکھ بھال کریں گی۔ لائحہ عمل میں ممبر سازی کے حوالہ سے بھی کام کیا جائے گا اور کوشش رہے گی کہ برطانیہ بھر سے مختلف کاروباری اہم شخصیات کو یوکے پاکستان چیمبر آف کامرس کا حصہ بنایا جائے ۔ چھوٹے بڑے کاروباری اداروں تک رسائی حاصل کی جائے گی اور باقاعدہ ماہانہ ٹی وی ٹاک شوز کا انعقاد کیا جائے گا جن میں سرمایہ کاری کے حوالہ سے مختلف تجربہ کار شخصیات کو بلا کر بہتر سے بہتر مشورہ لیا جائے گا ۔ لائحہ عمل میں یہ بھی واضح کیا گیا ہے کہ ٹی وی ٹاک شوز میں برطانیہ بھر سے تمام کاروباری شخصیات پروگرام میں کال کر کے ہر قسم کا سوال کر سکتی ہیں جو کہ یوکے پی سی سی آئی سے متعلقہ ہوں گے ۔ تنظیموں سے رابطے کے حوالے سے بھی یوکے پی سی سی آئی اوّلین ترجیحات پر کام کرے گی ۔ ہر وہ تنظیم جو پاکستان کو پروموٹ کرنے کیلئے کچھ نہ کچھ کر رہی ہے اور اپنا کردار ادا کر رہی ہے چاہے وہ یوکے میں ہے یا یورپ میں یا دیگر ممالک میں ‘ یوکے پی سی سی آئی ان سے رابطہ کر کے پاکستان کی انڈسٹری کی ترقی کیلئے کوششیں جاری رکھیں گی ۔ اس موقع پر چیمبر کے چیئرمین حاجی صدیق، سیکریٹری جنرل ڈاکٹر غلام مرتضے، سابق صدر رضی خان، نائب صدر نذر لودھی، فنایس سیکریٹری شاہد مرزا، اور ڈائریکٹران عطا الحق، سہیل سراج نے بھی گفتگو میں حصہ لیا اورآیئندہ سال کے پروگرام کی جزئیات بارے میڈیا کو آگاہ کیا۔ 2013-14ء کے لائحہ عمل میں یہ بات واضح کی گئی ہے کہ یو کے پی سی سی آئی کا آج تک اپنا دفتر نہیں بن سکا ہے ۔ بورڈ آف ایڈوائزری ایک پلان تیار کر رہی ہے جس کے تحت یو کے پی سی سی آئی اس سال انشاء اللہ اپنی بلڈنگ خریدے گی جس میں میڈیا کے ساتھ ساتھ پوری کمیونٹی کا تعاون بھی درکار ہو گا جس طرح کہ کمیونٹی ہمیشہ کرتی آئی ہے ۔ لائحہ عمل میں صدر یو کے پی سی سی آئی کے صدر عبدالمجید شاہین کی طرف سے واضح کیا گیا ہے کہ پاکستان ہائی کمیشن اور پاکستانی میڈیا یوکے پی سی سی آئی کے دست و بازو ہیں ۔ ان کے بغیر یو کے پی سی سی آئی کی ترقی ممکن نہیں ہے ۔ یو کے پی سی سی آئی کی ہمیشہ کوشش رہے گی کہ وہ ان اداروں کیساتھ تعاون جاری رکھے ۔ممبر سازی کے حوالہ سے کہا گیا ہے کہ صرف اور صرف رجسٹرڈ کاروباری شخصیات ہی یو کے پی سی سی آئی کا حصہ بن سکتے ہیں ۔ ہر وہ کاروباری حضرات جو اس کے ممبر بنتے ہیں ان کو باقاعدہ طور پر ممبر شپ کارڈ دےئے جائیں گے اور دیگر سہولیات سے بھی یو کے پی سی سی آئی کے ممبران مستفید ہو سکیں گے ۔ جن میں یو کے پی سی سی آئی کے ممبران پاکستان کے کسی بھی فائیو سٹار ہوٹل میں اپنا کارڈ دکھا کر 50 فیصد ڈسکاؤنٹ پر رہ سکتے ہیں ۔ پاکستانی اےئر پورٹس پر یو کے پی سی سی آئی کے ڈیسک کو یقینی بنایا جائے گا ۔ تا کہ جو بھی ممبر پاکستان جائے اس کو خصوصی سہولیات میسر ہوں ۔ اس سلسلہ میں پاکستانی ہائی کمیشن سے بھی رابطہ کیا گیا ہے کہ ممبران سے خصوصی تعاون کیا جائے ۔ صدر یو کے پی سی سی آئی نے یہ بھی کہا ہے کہ ہماری کوشش ہے کہ یو کے پی سی سی آئی کے ممبران کو پاکستان کے تمام اےئر پورٹس پر وی وی آئی پی لاؤنج میں انتظار کرنے کی سہولت مہیا کی جائیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم ماضی کی غلطیوں کو نہیں دہرائیں گے ۔ انہوں نے 2013-14ء کے لائحہ میں یہ بھی واضح کیا گیا ہے کہ ماہانہ نیو ز لیٹر بھی جاری کیا جائے گا جس میں بتایا جائیگا کہ گزرے ہوئے مہینے میں یو کے پی سی سی آئی کی کیا کارکردگی رہی اس کے لئے میڈیا کی مدد درکار ہوگی ۔ عبدالمجید شاہین نے کہا کہ یو کے پی سی سی آئی کی اوّلین ترجیح ہو گی کہ کمیونٹی کے مسائل حل کرنے کیلئے یو کے پی سی سی آئی اہم کردار ادا کرے ۔ اس سلسلہ میں اوور سیز منسٹری نے تمام صوبوں کے آئی جی صاحبان کیساتھ خصوصی ملاقات کی ہے ۔ جس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ یو کے پی سی سی آئی کے لیٹر ہیڈ کیساتھ آنے والی در خواست اور ہر مسئلے کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائے گا ۔ اس حوالے سے یو کے پی سی سی آئی دو اہم درخواستوں پر عمل کروا چکی ہے اور سرمایہ کاری کے حوالے سے دو درخواستوں پر عمل کروا چکی ہے ۔ لائحہ عمل میں یہ بھی واضح کیاگیا کہ پاکستان میں سرمایہ کاری کو محفوظ بنانے کیلئے باقاعدہ طور پر پاکستانی حکومت سے رابطہ کیا جائے گا اور پاکستان میں سرمایہ کاری کے حوالے سے سال کے مختلف دنوں میں نیشنل و انٹرنیشنل کانفرنسیں بھی کروائی جائیں گی ۔