مقبول خبریں
حضرت عثمان غنی ؓ نے دین اسلام کی ترویج میں اہم کردار ادا کیا: علامہ ظفر محمود فراشوی
بھارتی ظلم و جبر؛ برطانیہ کے بعد امریکی اخبارات میں بھی مسئلہ کشمیر شہہ سرخیوں میں نظر آنے لگا
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز اورسیمینارز منعقد کریگی : راجہ نجابت
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مودی کا دورہ فرانس، کشمیری و پاکستانی پیرس میں احتجاج کریں:جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت
وہ جو آنکھ تھی وہ اجڑ گئی ،وہ جو خواب تھے وہ بکھر گئے
پکچرگیلری
Advertisement
برطانیہ کی سیاسی و کاروباری شخصیت حاجی غلام رسول کی زیر قیادت بھارت کیخلاف احتجاجی مظاہرہ
مانچسٹر(محمد فیاض بشیر)مقبوضہ کشمیر میں انسانیت سوز مظالم اور آرٹیکل 370اور 35اے کی منسوخی کیخلاف مانچسٹر میں احتجاجی مظاہرہ،مظاہرے میں کشمیر کمیونٹی کی بھرپور شرکت۔بھارت کیخلاف شدید نعرے بازی،جبری ناطے توڑ دو کشمیر ہمارا چھوڑ دو۔کشمیر کی آزادی تک جنگ رہے جنگ رہے گی۔ظلم کے ضابطے ہم نہیں مانتے۔کشمیر کے وارث زندہ ہیں۔بھارت دہشتگرد ہائے ہائے۔مودی دہشتگرد ہائے ہائے‘ جسے فلک شگاف نعروں نے مانچسٹر کے در و دیوار ہلا کر رکھ دیئے۔مظاہرے کا اہتمام ممتاز کشمیری آزادی پسند رہنما حاجی غلام رسول نے کیا۔مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کشمیر تحریک برطانیہ کے چئیر مین چوہدری بشیر رٹوی نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں رائج بھارت کے کالے قوانین تحریک آزادی کو نہیں دبا سکتے۔بھارت کی جانب سے آرٹیکل 35،370 اے کی منسوخی کشمیر دشمن پالیسیوں کا حصہ ہے۔مقبوضہ کشمیر میں حق کی آواز بلند کرنے پربھارتی فورسز کی جانب سے مظاہرین پر گولیوں کی بوچھار کی گئی، چھروں اور آنسو گیس کا بے دریغ استعمال کیا جا رہا ہے۔ہم بھارت کی کشمیر کش اور شر پسند پالیسیوں کی مذمت کرتے ہیں اور اقوام متحدہ سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ کشمیریوں کے دیرینہ مسئلہ کا حل نکالے۔مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے حاجی غلام عباس نے کہا کہ مودی سرکار فی الفور 370 آئین شق معطلی والا فیصلہ واپس لے۔مقبوضہ کشمیر میں مسلم اکثریت کو اقلیت میں بدلنے کے گھناؤنے منصوبے پر اقوام متحدہ نوٹس لے۔کشمیر کی آزادی کی متمنی اور سیاسی و سماجی رہنما شہناز صدیق نے اپنے خطاب میں کہا کہ بھارت کبھی بھی پیار کی زبان نہیں سمجھے گا، اینٹ کا جواب پتھر سے دینا ہوگا۔تحریک آزادی کشمیر کا علم تھامے نہتے کشمیریوں نے بہادری کے ساتھ انڈیا کے مظالم کو برداشت کیے، اقوام متحدہ فی الفور اپنی قراردادوں پر عمل کروائے اور کشمیریوں کو انڈیا کے غاصبانہ قبضہ سے نجات دلائے۔بھارت نے لائن آف کنٹرول پر بلااشتعال کاروائیاں تیز کردی ہیں اور مقبوضہ کشمیر میں بڑے پیمانے پر نسل کشی کی مذموم کوششیں بھی شروع کردی ہیں اور بھارت کی اس روایتی ہٹ دھرمی نے دنیا کو پھر سے ایٹمی جنگ کے دہانے پر لاکھڑا کیا ہے۔مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے یونس آمین نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں آگ اور خون کا کھیل جاری ہے۔انسانیت کے دعویدار عالمی تھانیدار و انسانی حقوق کی انجمنیں خاموش تماشائی بنی ہوئی ہیں اور ہندوستان جیسی بڑی منڈی کھونے کے خوف میں معصوم کشمیریوں کو کشت و خون میں نہلایا جا رہا ہے اور کوئی ان کی دست گیری کرنے والا نہیں ہے۔بھارت جتنے چاہے ظلم کر لے ہم آزادی کے حصول تک لہو کے نذرانے پیش کرتے رہیں گے۔ دیگر مقررین میں شامل چوہدری عمران،مقدسہ بانو،رضیہ چوہدری، محبوب الٰہی،نصر اللہ خان،پاملہ ملک اور امجد بٹ نے کہا کہ کشمیریوں کو اس کڑی آزمائش سے سرخرو کرنے اور تحریک آزادی کو تقویت دینے کے لیے تمام سیاسی جماعتوں کو آپسی سیاسی اختلافات کو بالائے طاق رکھتے ہوئے دشمن کے سامنے سیسہ پلائی دیوار بننے کی ضرورت ہے۔مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت کی تبدیلی کی بھارتی کوشش اقوام متحدہ کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہے، یہ اقدام اسٹریٹجک صلاحیتوں کے مالک دو ہمسایہ ممالک کے تعلقات پر اثر انداز ہو سکتا ہے۔ کشمیرکی حق خودا رادیت پر کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے اور لاکھوں قربانیوں کی مزید دیکر بھی کشمیر کی آزادی کی جدوجہد کریں گے۔