مقبول خبریں
راچڈیل کیسلمئیرسنٹر میں کمیونٹی کو صحت مند رہنے،حفاظتی تدابیر بارے آگاہی ورکشاپ کا انعقاد
یورپی پارلیمنٹ میں قائم ’’فرینڈز آف کشمیر گروپ‘‘ کی تنظیم سازی کردی گئی
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
ہم نے سچ کو دیکھا ہے جھوٹ کے جھروکوں سے!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مخدوم طارق الحسن شاہ کے بیٹوں کی برسی، مختلف مکتبہ فکر کی سرکردہ شخصیات کی شرکت
ہڈرز فیلڈ(محمد فیاض بشیر)پاکستان کے شہر اوکاڑہ کمالیہ میں گزشتہ سال ٹریفک کے المناک حادثہ میں نامور شخصیت اور ماہر قانون دان مخدوم طارق الحسن شاہ کے نو سالہ اور تیرہ سالہ بیٹے جاں بحق ہو گئے ۔مرحومین کی پہلی برسی کے موقع پر ہڈرز فیلڈ شہر میں انکی رہائش گاہ پر منعقد کی گئ۔ برطانیہ میں تعینات پاکستان کے ہائی کمشنر نفیس زکریا، پاکستان سے خصوصی طور پر شرکت کے لیے آئے ممبر قومی اسمبلی ریاض فتیانہ کے علاوہ برطانیہ بھر سے سرکردہ شخصیات نے شرکت کی ۔ مخدوم طارق الحسن نے پاکستان کے شہر کمالیہ میں بے سہارہ بچوں کی تعلیم و تربیت کے لیے ضمام علی فاؤنڈیشن کا بھی سنگ بنیاد رکھا گیا۔ اس موقع پر برطانیہ میں تعینات پاکستان کے ہائی کمشنر نفیس زکریا کا کہنا تھا کہ ہم سب یہاں مخدوم طارق الحسن شاہ کے بیٹوں کی پہلی برسی کے موقع پر انکے دکھ میں شریک ہونے کے لیے آئے ہیں ۔ان کا مذید کہنا تھا کہ اتنی کم عمری میں شہادت کسی بھی ماں باپ کے لیے عظیم صدمہ سے کم نہیں ہوتی رب العالمین کی بارگاہ اقدس میں دعا ہے کہ کہ کوئ بھی اتنے گہرے دکھ سے دوچار نہ ہو ۔ ان کا کہنا تھا کہ اتنے بڑے سانحہ کے بعد جسطرح مخدوم طارق الحسن شاہ اور انکی اہلیہ نے اپنے آپ کو ٹوٹنے نہیں دیا قابل ستائش ہے اور ساتھ میں انہوں نے بے سہارا بچوں کی مدد کے لیے ضمام علی فاؤنڈیشن کی بھی بنیاد رکھ دی ہے جس پر ہم سب انکے نیک مقصد کے لیے ساتھ دیں گے ۔ ممبر قومی اسمبلی ریاض فتیانہ کا کہنا تھا کہ وہ برسی میں شرکت کے لیے باوجود پارلیمنٹ میں انتہائی مصروفیت تھی خصوصی طور پر آئے ہیں ۔ان کا مذید کہنا تھا کہ مرحوم بچوں کے سکول کے اساتذہ، ہم جماعت طالبعلموں کی بڑی تعداد اس بات کی عکاسی کرتی ہےکہ برطانیہ کی سوسائٹی انسانیت کی کتنی قدر کرتی ہے انکا کہنا تھا کہ ہم پاکستان میں بھی ایسے معاشرے کی تشکیل میں مصروف عمل ہیں ہمارا مذہب اسلام بھی ہمیں انسانیت کی خدمت اور ایک دوسرے کے دکھ درد میں شرکت کا درس دیتا ہے ۔لاہور کی کاروباری شخصیت قمر زمان کا کہنا تھا کہ مخدوم طارق الحسن شاہ کا بڑا حوصلہ ہے میں تو اتنے بڑے سانحہ کو برداشت نہیں کر سکا ۔ مانچسٹر کی نامور کاروباری شخصیت مسرت چوہدری کا کہنا تھا کہ ہم مخدوم طارق الحسن شاہ کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں اور انکے حوصلہ و ہمت کو سلام پیش کرتے ہیں انہوں نے آج جو فاؤنڈیشن کا قیام عمل میں لایا ہے وہ ایک اعلیٰ اقدام ہے ۔قاسم علی شاہ کا کہنا تھا کہ یہ بہت غیر معمولی بات ہے کہ اتنے بڑے سانحہ کے بعد مخدوم طارق الحسن شاہ اور ان کی اہلیہ نے غم سے نکل کر سوسائٹی کی بہتری کے لیے سوچا اور فاؤنڈیشن کی بنیاد رکھی اور کمالیہ جہاں انکے بیٹے دفن ہیں وہاں کی سرزمین کے بے سہارا بچوں کی تعلیم و تربیت کے لیے فاؤنڈیشن کا قیام عمل میں لایا۔ ڈاکٹر لیاقت ملک اور منور خان نیازی نے بھی زبردست الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا۔ کمیونٹی کی بڑی تعداد میں شرکت نے ثابت کیا کہ بحیثیت مسلمان و انسان ہمارے اندر انسانی ہمدردی کوٹ کوٹ کر بھری ہوئی ہے۔ختم قرآن مجید اور دعا کے بعد برسی میں شریک افراد کی تواضع کھانے سے کی گئی۔