مقبول خبریں
بین الاقوامی میڈیا نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جارحیت کی کلی کھول دی ہے:سردار مسعود خان
ڈیبی ابراھم کی قیادت میں ممبران پارلیمنٹ اور کمیونٹی رہنماؤں کی لارڈ طارق احمد سے ملاقات
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز اورسیمینارز منعقد کریگی : راجہ نجابت
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کی وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر اور شاہ غلام قادر سے ملاقات
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
9ستمبر کو اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے باہر بھرپور مظاہرہ کرینگے:راجہ نجابت حسین
سوچنے کے موسم میں سوچنا ضروری ہے!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
معروف قلمکار اورصحافی عارف محمود کسانہ کی بچوں کیلئے ’’ سبق آموز کہانیاں2‘‘مارکیٹ میں آگئی
لندن(خصوصی رپورٹ: اکرم عابد) معروف قلمکار اور صحافی عارف محمود کسانہ کی بچوں کیلئے دوسری کتاب مارکیٹ میں آگئی ہے، اسکا نام سبق آموز کہانیاں ٢ ہے۔ اس موقع پر انکا کہنا تھا کہ یہ کتاب کیسی ہے اس کا فیصلہ آپ اس کے مطالعے کے بعد ہی کر سکتے ہیں،اس کتاب میں دین اسلام کے بارے میں دلچسپ کہانیوں کی صورت میں بچوں کے سوالات کے جوابات ہیں،کہنے کو تو یہ کتاب بچوں کیلئے ہے لیکن حقیقت میں یہ کتاب والدین اور اساتذہ کرام کیلئے لکھی گئی ہے،عام لوگ بھی اسے اپنی ذوق مطالعہ کی تسکین کیلئے مفید پائیں گے،یہ کہانیاں قرآن حکیم اور سیرت رسول اکرمؐ کی روشنی میں لکھی گئی ہیں تاکہ بچوں کی ابتدا سے دینی تعلیمات کی روشنی میں تعلیم و تربیت ہو سکے،اسلام کے بارے میں بچوں کی جانب سے کئے گئے سوالات کے جوابات بھی قرآن اور اسوہ حسنہ کو مد نظر رکھتے ہوئے دلچسپ اور معلوماتی انداز میں دیئے گئے ہیں،اس سے قبل بچوں کیلئے میری پہلی کتاب ’’سبق آموز کہانیاں ‘‘ جب شائع ہوئی تو یہ اندازہ نہیں تھا کہ وہ کتاب اس قدر مقبول ہو گی کہ اردو کے بعد اور بہت سی زبانوں میں اس کے تراجم شائع ہوں گے،یہ اللہ تعالیٰ کا فضل و احسان ہے کہ دنیا بھر میں اس کوشش کو سراہا گیا اور ’’سبق آموز کہانیاں ‘‘ کی سویڈن،ناروے،جاپان،چین،ڈنمارک،بیلجیئم،ہالینڈ اور جرمنی میں تقاریب رونمائی و پذیرائی منعقد ہوئی اور اسے بہت پذیرائی ملی۔