مقبول خبریں
کشمیر میں مظالم کیخلاف اقدامات نہ اٹھائے تو تباہی کی ذمہ داری بین الاقوامی کمیونٹی پر ہو گی:نعیم الحق
ڈیبی ابراھم کی قیادت میں ممبران پارلیمنٹ اور کمیونٹی رہنماؤں کی لارڈ طارق احمد سے ملاقات
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز اورسیمینارز منعقد کریگی : راجہ نجابت
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کی وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر اور شاہ غلام قادر سے ملاقات
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
راجہ نجابت حسین کا مسئلہ کشمیر پر بحث میں حصہ لینے پر ارکان یورپی پارلیمنٹ کو خراج تحسین
سوچنے کے موسم میں سوچنا ضروری ہے!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
لاہور(محمد فیاض بشیر)گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم کی شدید مذمت کرتے ہوئے برطانیہ بھر میں آباد کشمیری و پاکستانی تارکین وطن کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کی موجودہ حکومت وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں مسئلہ کشمیر کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے اور کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی سفارتی اور سیاسی جدوجہد کی حمایت جاری رکھے گی،پاکستان پر امن باہمی اصولوں کے مطابق ہندوستان کے ساتھ مسئلہ کشمیر سمیت تمام مسائل پر بات چیت کے لئے تیار ہے،وہ پنجاب ہائوس میں جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے چیئرمین راجہ نجابت حسین کی قیادت میں ملنے والے ایک وفد سے بات چیت کر رہے تھے،وفد میں تحریک کے سیکرٹری جنرل محمد اعظم،گلگت بلتستان کی سابق ممبر اسمبلی آمنہ،حریت رہنما عبدالمجید لون،شائستہ صفی،پی ٹی آئی گلگت کے جنرل سیکرٹری محمد شاہد،انسانی حقوق کی رہنما مس کنول حیات،ریحانہ یاسمین،تحریک حق خود ارادیت لاہور کی کوآرڈینیٹر ثنا بخاری شامل تھے،راجہ نجابت حسین نے گورنر پنجاب کو تحریک حق خود ارادیت کی سرگرمیوں سےآگاہ کرتے ہوئے کہا کہ تارکین وطن نے بیرون ممالک خاص طور پر برطانیہ اور یورپ کی پارلیمنٹس کے ایوانوں میں جس طرح مسئلہ کشمیر کو زندہ رکھا ہوا ہے اور ممبران پارلیمنٹ سےمسلسل رابطے میں ہوتے ہیں اسی طرح پارلیمنٹ کی قومی و صوبائی اسمبلیوں اور سینیٹ میں مسئلہ کشمیر پر تسلسل کے ساتھ بحث و مباحثہ ہونا چاہئے تاکہ جب یہاں سے ممبران پارلیمنٹ اور سیاسی قائدین بیرون ممالک دوروں پر جائیں تو انہیں مسئلہ کشمیر کے پس منظر اور مقبوضہ جموں کشمیر کے حالات سے مکمل آگاہی حاصل ہو اور بیرون ممالک پاکستان کا نکتہ نظر اور موقف بھرپور طریقے سے پیش کر سکیں،گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے وفد سے بات چیت کرتےہوئے کہا کہ وہ گزشتہ تیس سالوں سے راجہ نجابت حسین کی قیادت میں ان کی ٹیم کے کام کو دیکھ رہے ہیں جس پر وہ خراج تحسین کے مستحق ہیں،گورنر نے کہا کہ تحریک حق خود ارادیت خواتین سمیت زندگی کے تمام مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے تارکین وطن کو منظم کر کے ان کے ذریعے مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو بے نقاب کرنے کیلئے جو کام کر رہے ہیں اس میں ہماری بھرپور معاونت اور سر پرستی انہیں حاصل رہے گی،انہوں نے وفد کو یقین دلایا کہ وہ وزیر اعظم عمران خان اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی تک بھی تحریک کا نکتہ نظر پہنچائوں گا اور جہاں بھی موقع ملا وہ کشمیریوں کی آواز کو بلند کرتے رہیں گے انہوں نے کہا کہ وہ چانسلر کی حیثیت سے پنجاب کی یونیورسٹیز اور دیگر تعلیمی اداروں میں بھی مسئلہ کشمیر سے آگاہی کیلئے سیمینارز اور کانفرنسز کے انعقاد کے لئے تعاون کریں گے،انہوں نے کہا کہ وہ سرور فائونڈیشن کے تحت آزاد کشمیر میں بھی بہت جلد عوامی فلاح کے پراجیکٹ شروع کریں گے،گورنر نےکہا کہ منگلا ڈیم کیلئے کشمیریوں کی قربانیاں ناقابل فراموش ہیں،متاثرین کے مسائل حل کرنے میں بھی وہ بھرپور معاونت کریں گے،چوہدری سرور نے کہا کہ آزاد کشمیر و گلگت بلتستان کے عوام کے بنیادی مسائل کو حل کرنے کیلئے بھی اپنی کوششیں جاری رکھیں گے،راجہ نجابت حسین نے گورنر پنجاب کو اسلام آباد،لاہور اور آزاد کشمیر کے علاوہ بیرون ممالک تحریک حق خود ارادیت کے پروگراموں میں شرکت کی دعوت بھی دی جو گورنر نے قبول کرتےہوئے بھرپور تعاون کا یقین دلایا۔