مقبول خبریں
مئیر کونسلر جاوید اقبال نے کمیونٹی کی خدمات کیلئے دن رات کوشش کی ہے:پیر ابو احمدمحمدمقصود مدنی
کونسلر محمد صادق نے دوسری بار میئر لندن بارو آف سٹن کا حلف اٹھالیا، کمیونٹی کی مبارکباد
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پلیک گیٹ ہا ئی سکول بلیک برن میں تعینات ٹیچر کیتھرین نے روزے رکھنے شروع کر دیے
مظلوم کے ساتھی ہو کہ ظالم کے طرفدار؟؟؟؟
پکچرگیلری
Advertisement
پی ٹی آئی برطانیہ کے جنرل سیکرٹری سیدعبد الباسط شاہ کاذوالفقارعلی اورانکی اہلیہ کے اعزاز میں عشائیہ
اولڈہم (محمد فیاض بشیر)پاکستان سے آئے مشہور و معروف صنعت کار ذوالفقار علی چوہان اور انکی اہلیہ کے اعزاز میں تحریک انصاف برطانیہ کے جنرل سیکرٹری سید عبد الباسط شاہ مشوانی نے خصوصی عشائیہ دیا اس موقع پر پاکستان میں سرمایہ کاری معاشی صورتحال ۔ پاکستان اور بھارت کے درمیان موجودہ کشیدگی بارے بھی تفصیلی بات چیت ہوئ۔ اس موقع پر سید عبد الباسط شاہ مشوانی کا کہنا تھا کہ پاکستان اور بھارت کی موجودہ کشیدہ صورتحال میں پاکستان نے ثابت کر دیا ہے کہ وہ جنگ کی طرف نہیں جانا چاہتے اور ثابت کر دیا کہ ہم امن پسند ہیں ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے بھارت کے پائلٹ کو رہا کر کے امن کا پیغام دیا لیکن انہوں نے جوابی کارروائی کر کے عالمی سطح پر نقصان اٹھایا ہے اور آج دنیا میں پاکستان کا نام روشن ہوا ہے ۔ان کا مذید کہنا تھا کہ دہشت گردی تب ختم ہو گی جب کشمیر کا مسئلہ حل ہو جائے گا۔ وزیر اعظم عمران خان مذاکرات کے لیے تیار ہیں جبکہ بھارت اسکے لیے تیار نہیں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ عالمی برادری کو بھارت پر دباؤ ڈالنا چاہیے کہ وہ دہشت گردی کو ختم کرنے کے لیے مسئلہ کشمیر حل کریں ۔ پاکستان سے آئے ممتاز صنعت کار ذوالفقار علی چوہان کا کہنا تھا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان امن و استحکام کی ضرورت ہے اور امید ہے اچھے رویہ یہ ممکن ہے۔ کاشفہ چوہان کا کہنا تھا پاکستان نے پوری دنیا کو امن کا پیغام دیا ہے اور پاکستان اور بھارت کے باشندے آپس میں امن سے رہتے ہیں اور بھارت کی حکومت آئے روز بارڈر لائن پر فائرنگ کر کے امن کو تباہ کر رہی ہے دونوں ممالک کو امن قائم کر کے اپنی معیشت پر توجہ دینی چاہیے۔