مقبول خبریں
وسط مدتی انتخابات کے سلسلہ میں جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت کے زیر اہتمام تقریب
پاکستان اور بھارت میں واقعی برابری کہاں ؟ ایک طرف محبت دوسری طرف نفرت
پاکستانی نژاد پیشہ ورانہ ماہرین اور طلبہ جہاں بھی ہوں اقدار کی پاسداری کریں: نفیس زکریا
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
حلقہ ِ ارباب ِ ذوق کے ادبی پروگرام میں پاکستانیوں اور کشمیری کونسلرز کی بڑی تعداد میں شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
راجہ نجابت کا کشمیر دوست امیدواران کو ووٹ دینے بارے آگاہی میٹنگ کا انعقاد
سہمے ہوئے لوگوںسے بھی خائف ہے زمانہ
پکچرگیلری
Advertisement
ممبران یورپی پارلیمنٹ نے مسئلہ کشمیر کو موثر انداز میں پیش کیا:تحریک حق خود ارادیت
بریڈ فورڈ ( محمد فیاض بشیر) تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے عہدیداران نے کہا ہے کہ یورپی پارلیمنٹ کی انسانی حقوق کمیٹی میں مسئلہ کشمیر پر بحث میں کشمیریوں کے نکتہ نظر کو برطانوی نژاد ممبران یورپی پارلیمنٹ نے مؤثر انداز میں پیش کیا ۔ نارتھ ویسٹ آف انگلینڈ سے لیبر رکن پارلیمنٹ واجد خان نے یورپی پارلیمنٹ میں کشمیریوں کی آواز بن کر کشمیری قوم کے دل جیت لیے ہیں ۔ یورپی پارلیمنٹ میں فرینڈز آف کشمیر کے عہدیداران نے گذشتہ 23سال سے جاری اپنی کاوشوں میں تیزی لا کر بھارت اور پاکستان کے علاوہ اقوام متحدہ کو بھی کشمیریوں کو ان کا حق دینے کا مطالبہ کر دیا ہے ۔ برطانیہ میں کشمیری تنظیموں اور ممبران پارلیمنٹ نے نا صرف برطانوی پارلیمنٹ میں کشمیر پر رپورٹ تیار کی بلکہ اب یورپی پارلیمنٹ میں بھی برطانیہ سے ارکان پارلیمنٹ نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی اشگاف الفاظ میں مذمت اور انہیں اجاگر کیا ۔ دیگر یورپ بھر سے صرف دو ارکان نے بات کی ۔برطانوی و یورپی پارلیمنٹ نے اقوام متحدہ انسانی حقوق کمشنر کی رپور ٹ پر عملدرآمد کا مطالبہ کرتے ہوئے آزادانہ تحقیقاتی کمیشن کے قیام اور دونوں ممالک بھارت اور پاکستان سے تعاون کا بھی مطالبہ کیا ۔ ان خیالات کا اظہار جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے چئیرمین راجہ نجابت حسین نے یورپی پارلیمنٹ برسلز سے واپسی پر بریڈ فورڈ میں اپنے ساتھیوں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر تحریک حق خود ارادیت کے سپرست اعلیٰ سردار عبد الرحمن خان ، سابق لارڈ مئیر راجہ غضنفر خالق، محمد بوٹا ہیری ، محمد رشید چوہدری بھی موجود تھے ۔ انہوں نے ایم ای پی واجد خان کو بھرپور کوششوں پر خراج تحسین پیش کیا ۔ یورپی پارلیمنٹ میں قائم آل پارٹیز فرینڈز آف کشمیر گروپ کے بانی ڈاکٹر بیری سیل جو کہ بریڈ فورڈ کے ممبر یورپی پارلیمنٹ تھے کی رکھی ہوئی بنیاد پر آج ایک بار پھر یورپی پارلیمنٹ میں لیبر گروپ لیڈر رچرڈ کوربٹ کنزرویٹو لیڈر اینتھیا میکنٹائر نے بھرپور قائدانہ کردار ادا کرتے ہوئے ایم ای پی واجد خان کی سپورٹ کی اور واجد خان نے انسانی حقوق کمیشن میں پٹیشن دائر کی۔برطانیہ سے ہی دیگر ارکان یورپی پارلیمنٹ ایم ای پی ڈیوڈ مارٹن ،ایم ای پی نوشینہ مبارک ،ایم ای پی امجد بشیر، ایم ای پی جولی وارڈ ،ایم ای پی تھریسا گرفن ، ایم ای پی شان سائمن نے متحد ہو کر مقبوضہ کشمیر کے عوام پر مظالم ، انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر کمیٹی کو بریفنگ دی اور کشمیری عوام کے حق خود ارادیت کی مکمل حمایت کا اعادہ بھی کیا ۔ راجہ نجابت حسین نے کہا کہ یورپی پارلیمنٹ میں اس ساری بحث اور اس میں کلیدی کردار ادا کرنے والے ارکان پارلیمنٹ کی اکثریت پہلے سے برطانیہ میں تحریک حق خود ارادیت کے ساتھ ملک کر کام کر رہی ہے ۔ تحریک حق خود ارادیت کی شبانہ روز سرگرمیوں سے انہیں بھرپور تحریک ہوئی اور یورپی پارلیمنٹ میں اس اہم مرحلے پر بھی تحریک حق کود ارادیت نے ان کے ستاھ ملک کر عملی کردار ادا کیا ۔ اس موقع پر تحریک حق خود ارادیت کے تمام عہدیدار اور ان شہروں میں مقیم کشمیری مبارکباد کے مستحق ہیں جن کے ممبران پارلیمنٹ نے کشمیریوں کے حق میں دلائل دیے ہیں ۔ راجہ نجابت حسین نے اس موقع پر ان تمام پاکستانی و کشمیریوں کا بھی شکریہ ادا کیا جنہوں نے ماضی قریب میں تحریکی سرگرمیوں میں معاونت اور تعاون کیا ۔ راجہ نجابت حسین نے پریس کانفرنس میں صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان ، وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر خان ، سابق وزیر اعظم سردار عتیق احمد خان ، سابق وزیر اعظم بیرسٹر سلطان محمود ، اپوزیشن لیڈر چوہدری محمد یاسین ، حریت کانفرنس کے رہنماؤں شیخ تجمل الاسلام ، غلام محمد صفی ، عبد الحمید لون ، اعجاز رحمانی ، سید یوسف نسیم ، فاروق رحمانی ، سید فیض نقشبندی ، الطاف وانی ، شمیم شال ، ڈاکٹر سید نذیر گیلانی کی کاوشوں اور سرپرستی کا شکریہ ادا کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ان تمام لیڈروں نے وقتا فوقتا برطانیہ اور یورپی پارلیمنٹ میں آ کر کشمیری عوام کے ھالات سے ممبران پارلیمنٹ کو آگاہ کیا ۔ راجہ نجابت حسین نے خصوصی طور پر برسلز سے سردار صدیق خان ، سید علی رضا ،چوہدری خالد محمود جوشی ، راجہ زیب خان ، راجہ محمد فاروق ، چوہدری نعیم پیرس ، آصف جرال ، علی شاہ نواز ناروے ، زاہد ہاشمی پیرس ، چوہدری پرویز لوسر اور ان کے ساتھیوں کا بھی شکریہ ادا کیا جنہوں نے وقتا فوقتا تحریکی عہدیداروں سے برسلز و یورپ میں تعاون کیا ۔راجہ نجابت حسین نے برطانیہ کی تمام سیاسی ، سماجی ، مذہبی تنظیموں کے عہدیداروں کے تعاون کو بھی تحریک آزادی کشمیر کے لیے مثبت اقدام قرار دیتے ہوئے ان کی کاوشوں پر بھی خراج تحسین پیش کیا ۔ اس موقع پر تمام تحریکی عہدیداروں اور معاونین کو بھی اس تاریخی کامیابی پر مبارکباد پیش کی ۔