مقبول خبریں
سیاسی ،سماجی کمیونٹی شخصیت بابو لالہ علی اصغر کا مقبوضہ کشمیر کی صورتحال بارے میٹنگ کا انعقاد
بھارتی ظلم و جبر؛ برطانیہ کے بعد امریکی اخبارات میں بھی مسئلہ کشمیر شہہ سرخیوں میں نظر آنے لگا
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز اورسیمینارز منعقد کریگی : راجہ نجابت
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت کا کشمیر پٹیشن پر دستخطی مہم کا آغاز ،10ستمبر کو پیش کی جائیگی
کافر کو جو مل جائے وہ کشمیر نہیں ہے!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
بگزٹ کے بعد ملک میں بے روز گاری اور مہنگائی میں اضافہ ھو گا:میاں مظہر اسلم
مانچسٹر(محمد فیاض بشیر)معروف ماہر قانون دان میاں مظہر اسلم سالیسٹر نے میڈیا کو دیے گئے اپنے ایک بیان میں کہا حکومت بریگزٹ سے قبل برطانیہ کی امیگریشن پالیسی کے حوالے سے بل منظور کرانے کی کوشش کررہی ہے جو ایک سنگین غلطی ثابت ہوگی اور اس سے وسائل کی کمی کی وجہ سے پہلے ہی ہسپتال جو شدید مشکلات سے دوچار ہیں اپنے وسائل سے محروم ہوجائیں گے۔میاں مظہر اسلم کاکہنا تھا کہ امیگریشن وائٹ پیپر کاحشر بھی برطانیہ میں رہنے والے یورپی شہریوں کے ساتھ آنے والے ونڈرش سکینڈل جیسا ہی ہوگا،برطانیہ میں رہنے والے یورپی باشندے اپنی شہریت کے حوالے سے سخت ذہنی تناؤ کاشکار رہیں گے۔تھنک ٹینک کا کہناہے کہ اگر دارالعوام نے اس کی منظوری دیدی تو اس سے نرسوں کی کمی ہوجائے گی اور خدشہ ظاہر کیا ہے کہ اس بل میں مہاجرین کی تنخواہ 30ہزار پونڈ ضروری قرار دیاگیا ہے جس کی وجہ سے بیرون ملک سے آنے والی بہت سی نرسوں کو واپس جانا ہوگا ،اور اگر ایسا ہوا تو اس کی وجہ سےبہت سے ضعیف العمر افراد کی دیکھ بھال کرنے والا کوئی نہیں ہوگا۔ماہر قانون نے نے وضاحت کی کہ اس بل کے بہت سے مثبت پہلو بھی ہیں لیکن اس مین بہت امور انتہائی پیچیدہ اورمبہم تاثر پیدا کرتاہےاور زیادہ ہمارے ملک کا تاثر خراب ہوسکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ بگزٹ کے بعد ملک میں بے روز گاری مہنگائی میں بھی اضافہ ھو گا،افرادی قوت میں کمی کے سبب مشکلات میں بھی اضافہ ھو گا،اگر ملکی اکنامی معاشی کی جانب بڑھبے چنچلنگ کی جانب توجہ نہ دی گئ تو عوام سڑکوں پر آنے پر مجبور ھو جائے گئ،ملکی تمام سیاسی جماعتوں کو ملکی مفادات مدنظر رکھنے چاھے تاکہ ملک کا نقصان نہ ھو ۔